The news is by your side.

Advertisement

کیا ڈاکٹر ماہا کو خودکشی پر مجبور کیا گیا؟ کیس میں نیا موڑ

کراچی: شہر قائد کے علاقے ڈیفنس میں مبینہ طور پر خودکشی کرنے والی ڈاکٹر ماہا کے کیس میں نیا موڑ آگیا۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق کراچی میں ڈاکٹر ماہا کی مبینہ خودکشی کیس میں نیا موڑ آگیا، ڈاکٹر ماہا کے والد نے پولیس کو دوست اور دو ڈاکٹروں کے خلاف کارروائی کی درخواست دے دی۔

والد نے درخواست میں موقف اپنایا کہ ماہا کا دوست اور دو ڈاکٹر اسے پریشان کرتے تھے، ٹینشن کا شکار ہوکر ماہا نے اپنی جان لے لی۔

ڈاکٹر ماہا کے والد کا کہنا ہے کہ دوست اور ڈاکٹر ناصرف ماہا کو ٹینشن دیتے تھے بلکہ انہوں نے بیٹی کو نشے کا بھی عادی بنادیا تھا۔

یہ پڑھیں: ڈاکٹر ماہا کی خودکشی، دوست نے بیان ریکارڈ کروا دیا

ذرائع کے مطابق دونوں ڈاکٹر ماہا کے ساتھ ہی کام کرتے تھے جبکہ جنید ان تینوں کا مشترکہ دوست تھا، ماہا کے والد کا کہنا ہے کہ ان تینوں افراد کے خلاف قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ڈاکٹر ماہا کی خودکشی کی وجہ بننے والوں کے خلاف کارروائی ہوسکتی ہے۔

یاد رہے کہ چند روز قبل کراچی کے علاقے ڈیفنس کی رہائشی ڈاکٹر ماہا نے مبینہ طور پر خودکشی کرلی تھی، پولیس نے شک کی بنیاد پر دو افراد کو گرفتار کیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں