site
stats
پاکستان

پی ایس پی جیسی ٹیسٹ ٹیوب جماعت سے اتحاد ممکن نہیںِ : میئر کراچی

کراچی: وسیم اختر نے کہا ہے کہ بلدیاتی حکومت کو اختیارات نہ دینا توہین عدالت ہے، 18 ویں ترمیم کی بدولت صوبے ریاست میں ہی ریاست بن چکے ہیں مگر پھر بھی جمہوری حکومتیں اختیارات کو نچلی سطح پر منتقل کرنا نہیں چاہتیں، پی ایس پی جیسی ٹیسٹ ٹیوب جماعت سے اتحاد ممکن نہیں۔

اے آر وائی کے پروگرام پاور پلے میں میزبان ارشد شریف سے گفتگو کرتے ہوئے میئر کراچی نے کہا کہ شہر میں روزانہ بجلی کا بریک ڈاؤن روز کا معمول نہیں البتہ شہریوں کو لوڈشیڈنگ کا سامنا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کراچی میں بجلی کے بلوں سے کے الیکٹرک زیادہ وصولی کرتا ہے، اسپتالوں میں لوڈشیڈنگ کی جاتی ہے جس کے خاتمے کے لیے کے الیکٹرک سے درخواست کردی ہے۔

میئر کراچی نے کہا کہ 18 ویں ترمیم کی منظوری اور سپریم کورٹ کے احکامات کے باجود بلدیاتی حکومت کو اختیار نہیں دیے جارہے جو توہین عدالت ہے ، شہر کراچی سندھ کو 90 فیصد اور پاکستان کو 65 فیصد ریونیو دیتا ہے مگر بدلے میں اس شہر کو کچھ نہیں دیا جاتا۔

وسیم اختر نے کہا کہ اب تک شہر کے لیے سب سے زیادہ کام سابق صدر پرویز مشرف کے دور میں ہوا، انہوں نے بلدیاتی انتخابات نچلی سطح تک منتقل کیے تو شہر کا نقشہ تبدیل ہوگیا، وزیراعظم اور وزیراعلیٰ سمیت کوئی بھی شہر کے مسائل حل کرنے کے لیے سنجیدہ نہیں جو ناانصافی ہے۔

میئر کراچی نے تسلیم کیا کہ رینجرز آپریشن کے بعد شہر کے حالات بہت بہتر ہوئے اور یہاں کے عوام کو سکون نصیب ہوا ساتھ انہوں نے کہا کہ کراچی میں اسلحہ بنتا نہیں بلکہ کہیں سے آتا ہے اب صوبائی حکومت کو چاہیے کہ وہ داخلی راستوں پر کڑی نگرانی کرے تاکہ شہر میں کوئی اسلحہ نہ لاسکے۔

پی ایس پی سے اتحاد کے حوالے سے پوچھے جانے والے سوال پر میئر کراچی نے کہا کہ اتحاد اُن سے ہوتا ہے جن کی کوئی سیاسی حیثیت ہو، ہماری جماعت کا ایک وژن ہے اس کے پیچھے ایک جدوجہد ہے مگر پی ایس پی کو لاکر بٹھایا گیا ہے، ایسی ٹیسٹ ٹیوب جماعتیں ملک بھر میں نظر آتی ہیں جو کسی بھی سطح پر کامیاب نہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top