The news is by your side.

Advertisement

واشنگٹن ڈی سی میں بھی کرونا وائرس کی وجہ سے ایمرجنسی نافذ

واشنگٹن: واشنگٹن ڈی سی کی میئر نے ریاست میں نہایت مہلک کرونا وائرس کی وجہ سے ایمرجنسی کے نفاذ کا اعلان کر دیا ہے، اس سے قبل نیویارک کے گورنر اینڈریو کومو نے بھی کرونا وائرس پھیلنے کی وجہ سے ہنگامی حالات نافذ کرنے کا اعلان کیا تھا۔

تفصیلات کے مطابق واشنگٹن میں اب تک 10 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے، میئر میوریل باؤزر نے ریاست میں پبلک ہیلتھ ایمرجنسی کے نفاذ کا اعلان کر دیا۔ ایمرجنسی کی حالت کے نفاذ کے بعد میئر کے پاس وسیع اختیارات آ گئے ہیں، اور وہ اب زیادہ قوت اور ذرایع کے ساتھ فوری طور پر وائرس کو روکنے والے اقدامات کر سکیں گی۔

واشنگٹن ڈی سی میں چھ نئے کیسز سامنے آنے پر ریاست کی ہیلتھ ڈائریکٹر لکونڈرا نیسبٹ نے کہا کہ متاثرہ افراد کا جائزہ لینے کے بعد یہ بات سامنے آئی ہے کہ ضلع کولمبیا میں وائرس کا پھیلاؤ ایک شخص سے دوسرے کو منتقلی سے ہوا ہے۔

کرونا وائرس: نیویارک میں ایمرجنسی نافذ

کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے پیش نظر واشنگٹن میں سینکڑوں تقریبات منسوخ کر دی گئی ہیں، جب کہ ایک ہزار سے زائد لوگوں کے اجتماعات پر بھی پابندی عائد کی جا چکی ہے، میئر نے نیوز کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ غیر ضروری چھوٹے اجتماع بھی منعقد نہ کیے جائیں۔

واشنگٹن ڈی سی کی میئر میوریل باؤزر نیوز کانفرنس میں ایمرجنسی کا اعلان کر رہی ہیں

برطانیہ کا لاک ڈاؤن کرنے پر غور، ایک اور وزیر نے آئسولیشن اختیار کر لی

20 مارچ کو ہونے والا واشنگٹن کا سب سے بڑا اجتماع چیری بلاسم بھی ملتوی کر دیا گیا ہے، کیپٹل ون سمیت بڑے اسٹیڈیمز نے بھی 31 مارچ سے تمام تقریبات منسوخ کرنے کا اعلان کر دیا، سینٹ پیٹرک ڈے پریڈ بھی ملتوی کر دی گئی۔

واشنگٹن میں آیندہ پیر کو تمام اسکول بند رکھنے کے احکامات جاری کر دیے گئے، متعدد یونی ورسٹیوں نے آن لائن کلاسوں کا آغاز کر دیا، طالب علموں کو یونی ورسٹی نہ آنے کی ہدایات جاری کی گئی ہے۔ خیال رہے کہ امریکا میں نئے اور مہلک وائرس COVID 19 سے اب تک 38 افراد ہلاک ہو چکے ہیں، جب کہ 1,336 افراد وائرس سے متاثر ہیں۔

کرونا وائرس پھیلنے کے خدشے کے پیش نظر دنیا بھر میں بڑے بڑے اقدامات کیے جا رہے ہیں، برطانیہ نے بھی ملک میں لاک ڈاؤن پر غور شروع کر دیا ہے، برطانیہ یورپ میں وائرس سے متاثرہ ممالک میں پانچویں نمبر پر آ چکا ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں