The news is by your side.

Advertisement

پانی کا بحران : مراد علی شاہ کی زیر صدارت تمام سیاسی و غیر سیاسی اسٹیک ہولڈرز کا اجلاس

30فیصد پانی کے نقصانات کو کنٹرول کرنے اور انتظامی اقدامات کے ذریعے پانی کی چوری کو کنٹرول کرنے سے متعلق فیصلہ

کراچی : وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ نے شہر میں پانی کے بحران کے پیش نظر تمام سیاسی اور غیر سیاسی اسٹیک ہولڈرز کا ایک اجلاس بلایا تاکہ ان کے مشترکہ وزڈم کے ساتھ قلیل اور طویل المدتی حل وضع کیے جائیں۔

انہوں نے کے فور منصوبے سے متعلق اسٹیک ہولڈرزکی غلط فہمیاں بھی ختم کیں۔ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ30فیصد پانی کے نقصانات جو کہ 174ایم جی ڈی بنتا ہے کو کنٹرول کرنے اور انتظامی اقدامات کے ذریعے پانی کی چوری کو کنٹرول کرنے سے متعلق فیصلہ کیا۔

اکتوبر کے آخر تک 100ایم جی ڈی اور 65ایم جی ڈی پانی سسٹم میں شامل ہوجائے گا اور وقت کے ساتھ کی گئی کاوشوں کی بدولت کے فور منصوبہ بھی مکمل ہوجائے گا جو کہ ایک مشکل ٹاسک ہے۔

کثیر الجماعتی اور اسٹیک ہولڈرز کانفرنس جمعہ کو نیو سندھ سیکریٹریٹ کی ساتویں منزل پر منعقد ہوئی جس میں چیف سیکریٹری ممتازشاہ، صوبائی وزیربلدیات سعید غنی، وزیراعلی سندھ کے مشیر برائے اطلاعات مرتضٰی وہاب، وزیراعلی سندھ کے معاونینِ خصوصی وقار مہدی اور راشد ربانی، وسیم اختر، سیکریٹری بلدیات خالد حیدر شاہ، ایم ڈی واٹر بورڈ اسد اللہ خان، پی ڈی کے فور اسد ضامن اور دیگر نے شرکت کی۔

وفود جنہوں نے اجلاس می شرکت کی ان میں سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف فردوس شمیم نقوی، پی ٹی آئی کے حلیم عادل شیخ اور جنید شاہ،ایم کیو ایم کے خواجہ اظہار،محمد حسین، اے این پی کے شاہی سید، یونس بونیری، سنی تحریک کے ثروت اعجاز قادری شامل ہیں۔

اس کے علاوہ اجلاس میں پی ایس پی کے مصطفی کمال، ارشد وہرہ، آصف حسنین، حفیظ الدین، جے یو آئی کے قاری عثمان اور مولانا عبدالکریم، پی پی آئی کے ملک ایوب اور عمران گجر، پی ڈی پی کے بشارت مرزا، جے آئی کے سیف الدین اور جنید موتی والاموجود تھے۔

مزید پڑھیں: کراچی کے مسائل کا حل: وزیر اعلیٰ سندھ نے آج اعلیٰ سطح اجلاس طلب کر لیا

فاروق ستار کے نمائندے کامران اختر، کراچی آرٹ کونسل کے احمد شاہ، آباد کے حسن بخش، کے سی سی آئی کے زبیر موتی والا اور جاوید بلوانی، ایف پی سی سی آئی کے اختیار بیگ اور کراچی پریس کلب کے امتیاز فاران نے شرکت کی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں