پانی کی قلت:ارسا نے ہنگامی اجلاس 31 مارچ کوطلب کرلیا -
The news is by your side.

Advertisement

پانی کی قلت:ارسا نے ہنگامی اجلاس 31 مارچ کوطلب کرلیا

لاہور: ڈیموں میں پانی کی قلت پر ارسا نے ہنگامی اجلاس 31 مارچ کوطلب کرلیا ہے، جس میں چاروں صوبائی حکومتوں کے نمائندے شریک ہوں گے.

تفصیلات کے مطابق ڈیموں میں پانی کی قلت اور ارسا کا ہنگامی اجلاس 31مارچ کوطلب کرلیا ہے، جس میں چاروں صوبائی حکومتوں کے نمائندے شریک ہوں گے.

اجلاس میں خریف کی فصل کے لیےصوبوں میں پانی کی تقسیم پر غور ہوگا، خریف کی فصل کے لیے سندھ اور پنجاب کے لیے پانی کی کٹوتی کا امکان ہے، یکم اپریل سےسندھ اور پنجاب کے پانی میں30 فیصد تک کٹوتی کا امکان کیا جاتا ہے.

واضح رہے کہ وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ پانی کی قلت پر وفاقی حکومت سے احتجاج کرچکے ہیں.

پانی کی قلت

یاد رہے کہ وزیراعظم نواز شریف نے مستقبل کی پیشن گوئی کرتے ہوئے کہا تھا کہ عنقریب پانی کی کمی پرقابوپانا ایک بڑا چیلنج ہوگا.

پانی کی قلت کے حوالے سے وزیرِ پانی و بجلی خواجہ آصف نے کہا تھا کہ ایک بحران پر قابو پانے کی امید دلاتے ہیں تو دوسرے بحران کے خدشے کا پتا بھی دیتے ہیں، وزیرِ پانی و بجلی کا کہنا تھا کہ آئندہ چند برسوں میں ملک کو پانی کے قحط کا سامنا ہوگا۔

پانی کا بحران

مذکورہ بالا اصطلاح سے مراد دنیا کے پانی کے وسائل بمقابلہ انسانی مانگ ہے، اس اصطلاح کا اطلاق اقوام متحدہ اور دیگر عالمی تنظیموں نے کیا ہے۔ دینا کے بہت سے حصوں میں تازہ پانی (خاص طور پر پینے کے قابل پانی) کی قلت ہے.

آبادی اور فی کس استعمال میں اضافے اور عالمی حدت کی وجہ سے بہت سے ممالک میں پانی کی شدید قلت ہونے کی پیش گوئی کی گئی ہے، اس مسئلہ پر مستقبل میں جنگیں ہونے کا بھی امکان ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں