The news is by your side.

Advertisement

آبی تنازعات: پاکستانی وفد22 مارچ کو بھارت کے لیے روانہ ہوگا

لاہور: آبی تنازعات پر مذاکرات کے لیے پاکستانی وفد22 مارچ کو بھارت کے لیے روانہ ہوگا، پاک بھارت آبی مذاکرات 23 اور 24 مارچ کو نئی دہلی میں ہوں گے۔

تفصیلات کے مطابق آبی مذاکرات میں پاکستانی وفد کی نمائندگی انڈس واٹر کمشنر مہر علی شاہ کریں گے جبکہ بھارت کی نمائندگی بھارتی واٹر کمشنر پردیپ کمار کی طرف سے ہوگی۔ خیال رہے 2018میں پاک بھارت آبی مذاکرات لاہور میں ہوئے تھے، سندھ طاس معاہدے کے تحت ہر سال آبی مذاکرات ضروری ہیں۔

ذرایع کا کہنا ہے کہ پاکستان مقبوضہ کشمیر میں متنازع آبی منصوبوں پر اعتراضات اٹھائے گا، بھارت کے ریتلے اور پکل ڈل پاور پراجیکٹس پر تحفظات ہیں۔

بڑی پیش رفت ، پاک بھارت آبی تنازعات پر مذاکرات کا آغاز 23 مارچ کو نئی دلی میں ہوگا

اپنے ایک حالیہ بیان میں انڈس واٹرکمشنر مہرعلی شاہ کا کہنا تھا کہ 23اور24مارچ کو2روزہ آبی مذاکرات میں نئی دلی میں شرکت کریں گے، پکل ڈل اور ریتلے سمیت 4 بھارتی آبی منصوبوں پر اپنے مؤقف پر قائم ہیں۔

واضح رہے کہ 2سال قبل پاک بھارت آبی مذاکرات لاہور میں ہوئے تھے ، مذاکرات میں پاکستانی حکام کا کہنا تھا کہ پکل ڈل، لوئرکلنائی پن بجلی گھروں کے ڈیزائن پراعتراض ہے اور مطالبہ کیا تھا پکل ڈل پن بجلی ذخیرہ کرنے کی سطح اونچائی میں 5میٹرکمی کی جائے اور سپل ویز کے گیٹوں کی تنصیب میں 40 میٹراونچائی کا اضافہ کیا جائے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں