کراچی کا پانی کیسے چوری کیا جاتا ہے، ’سرعام‘ ٹیم نے پتہ لگالیا
The news is by your side.

Advertisement

کراچی کا پانی کیسے چوری کیا جاتا ہے، ’سرعام‘ ٹیم نے پتہ لگالیا

کراچی: شہر قائد کے رہائشیوں کا پانی کب، کیسے اور کہاں سے چوری کیا جاتا ہے اے آر وائی نیوز کے پروگرام ’سرعام‘ کی ٹیم نے پتا لگالیا۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں پانی کا بحران شدت اختیار کرتا جارہا ہے شہری آئے روز پانی کی عدم فراہمی پر احتجاج کرتے ہوئے دکھائی دیتے ہیں، کراچی والوں کا پینے کا پانی کب، کیسے اور کہاں سے چوری کیا جاتا ہے اے آر وائی نیوز کی ٹیم ’سرعام‘ نے پتا لگالیا۔

دھابے جی سے آنے والی پائپ لائن سے رات گئے موٹریں لا کر پانی چوری کیا جاتا ہے، چوری شدہ پانی قبضہ کی گئی سرکاری زمینوں پر کاشتکاری کے لیے استعمال ہورہا ہے۔

رات گئے کیے جانے والے آپریشن میں خاردار جھاڑیوں میں چھپائی گئی پانی کی چوری کی مشینیں بھی برآمد کرلی گئی ہیں، وڈیروں کی جانب سے پمپ اور جنریٹر لگا کر پانی چوری کیا جارہا تھا۔

ایم ڈی واٹر بورڈ خالد شیخ نے کہا کہ پانی چوری کی تین دن پہلے ایف آئی آر کٹوائی گئی ہے، تحقیقات کررہے ہیں ملزمان کے خلاف ہر صورت کارروائی کی جائے گی۔

ایم ڈی واٹر بورڈ خالد شیخ سے جب یہ پوچھا گیا کہ ایف آئی آر کس کے خلاف کٹوائی گئی ہے تو وہ بتانے سے قاصر رہے اور آئیں بائیں شائیں کرتے رہے۔

دوسری جانب وفاقی وزیر آبی وسائل فیصل واوڈا کہتے ہیں کہ اقرار الحسن ہمارے ہیرو ہیں، ماضی میں بھی انہوں نے بہت کچھ اپنے پروگرام سرعام میں بے نقاب کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اقرار الحسن نے بطور شہری پانی چوری کی نشاندہی کی، اقرار الحسن کا شکر گزار ہوں انہوں نے ذمہ داری کا مظاہرہ کیا، پانی کی چوری کا شروع دن سے اظہار کررہا ہوں وڈیروں کی نشاندہی بھی کی۔

واضح رہے کہ پانی کی چوری کو بے نقاب کرنے کا پروگرام جمعے کی شام 7 بجکر 5 منٹ پر نشر کیا جائے گا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں