The news is by your side.

Advertisement

ہوا سے پانی کھینچنے والی ٹربائن

ماہرین کا کہنا ہے کہ دنیا بھر میں پینے کے پانی کے ذخائر تیزی سے کم ہو رہے ہیں جس کا منفی اثر زراعت پر بھی ہوگا اور کروڑوں افراد قحط کا شکار ہوجائیں گے۔

تاہم سائنس دان اب ایسی ایجادات کر رہے ہیں جو مختلف طریقوں سے ہمارے قدرتی وسائل میں اضافہ کرے، ماحول دوست ہوں اور ہماری زمین پر موجود وسائل کو کفایت شعاری سے استعمال کرنے میں مدد دیں۔

مزید پڑھیں: پانی کی قلت سے مختلف ممالک کی جی ڈی پی میں کمی

ایسی ہی ایک ایجاد واٹر سیر نامی ٹربائن بھی ہے جو فضا میں موجود پانی کو پینے کے لیے فراہم کرے گی۔

دن کے 24 گھنٹے کام کرنے والی یہ ٹربائن فضا میں موجود پانی لے کر اسے پینے کے قابل بناتی ہے اور اس کے لیے اسے کسی قسم کی بجلی، توانائی، یا کیمیکلز کی ضرورت نہیں ہوتی۔

اس کے زمین کے اوپر لگے بلیڈز ہوا کی طاقت سے گھومتے ہیں اور ہوا کو زمین کے اندر نصب چیمبر میں دھکیلتے ہیں۔ یہ چیمبر مٹی میں دبا ہوتا ہے اور ٹھنڈی مٹی کی وجہ سے خاصا سرد ہوتا ہے۔

water-seer-2

یہ اپنے اندر موجود گرم ہوا کو بھی ٹھنڈا کردیتا ہے اور اس میں موجود پانی قطروں کی صورت میں چیمبر کی دیواروں پر جم جاتا ہے۔

یہ ٹربائن ہوا چلنے یا نہ چلنے دونوں صورتوں میں کام کرتی ہے اور روزانہ 37 لیٹرز پانی فراہم کرتی ہے۔

یہ ٹربائن ان گاؤں دیہاتوں میں نصب کرنے کے لیے بہترین ہے جہاں بچوں اور خواتین کو پانی حاصل کرنے کے لیے میلوں دور تک چلنا پڑتا ہے۔

پانی کے حصول کے لیے گاؤں کی خواتین کو کیسے درد ناک سفر طے کرنے پڑتے ہیں، پڑھیں خصوصی رپورٹ

واضح رہے کہ ماہرین کا کہنا ہے کہ دنیا میں موجود پانی کے ذخائر میں تیزی سے ہوتی کمی کے باعث 2025 تک دنیا کی ایک تہائی آبادی پینے کے صاف پانی سے محروم ہوجائے گی۔

مزید پڑھیں: پانی کو مضر صحت اجزا سے پاک کرنے کا آسان طریقہ

اس وقت دنیا بھر میں 780 ملین افراد پینے کے صاف پانی سے محروم اور گندا اور آلودہ پانی پینے پر مجبور ہیں جو انہیں مختلف بیماریوں اور بعض اوقات موت سے ہمکنار کردیتا ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں