بھارتی رویے کے خلاف عدالت جائیں گے، چیئرمین پی سی بی کا اعلان Chariman PCB
The news is by your side.

Advertisement

بھارتی رویے کے خلاف عدالت جائیں گے، چیئرمین پی سی بی کا اعلان

لاہور: پاکستان کرکٹ بورڈ کے چیئرمین شہریار خان نے کہا ہے کہ بھارت کے ساتھ سیریز نہ کھیلنے پر ہمیں کئی ملین ڈالرز کا نقصان ہورہا ہے، سیریز نہ کھیلنے کا معاملہ آئی سی سی لے کر جائیں گے اگر حل نہ ہوا تو بھارت کے خلاف عدالت جائیں گے۔

لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے شہریار خان نے کہا کہ بھارت کے خلاف ہمارا کیس مضبوط ہے کیونکہ ہمیں اب تک کروڑوں روپے کا نقصان ہوچکا ہے، بھارت مسلسل معاہدے کی خلاف ورزی کررہا ہے اور آج بھی اس کا رویہ اس بات کی غمازی ہے کہ وہ پاکستان کے ساتھ سیریز کھیلنے کے لیے تیار نہیں۔

انہوں نے کہا کہ دبئی سیریز سے انکار پر بھارت کو قانونی نوٹس بھیج رہے ہیں اورآئی سی سی میں اپنے تحفظات پیش کرنے جارہے ہیں اگر وہاں شنوائی نہ ہوئی تو عدالت کا دروازہ کھٹکھٹائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ کرکٹ بورڈ نے بگ تھری ختم کرنے کے لیے اختیارات دے دیے ہیں اس کے لیے آئی سی سی سے مطالبہ کیا جائے گا کہ بگ تھری کے سلسلے کو ختم کیا جائے  اور اس مطالبے میں انگلینڈ، آسٹریلیا بھی ہمارے ساتھ ہیں۔

پڑھیں: ’’ بھارتی کرکٹ بورڈ کااپنی حکومت سے’پاک بھارت سیریز‘ کا مطالبہ ‘‘

چیئرمین پی سی بی نے کہا کہ بھارت اور سری لنکا کے علاوہ سب بگ تھری کا خاتمہ چاہتے ہیں، بھارتی کرکٹ بورڈ پیسوں کے لالچ میں اسے جاری رکھنے کا خواہش مند ہے باوجود اس کے کہ آئی سی سی میں بھی بگ تھری ختم کرنے کا معاملہ زیر بحث ہے، پاکستان بھی اس کے خاتمے کے لیے مضبوط لابنگ کرنے کی کوشش کرے گا۔

پی ایس ایل تھری کے حوالے سے پی سی بی کے چیئرمین نے کہا کہ ’’پی ایس ایل کی تیاریاں شروع کردی ہیں، پاکستان سپر لیگ تھری کے میچز مختلف شہروں میں کروائے جائیں گے‘‘۔

شہریار خان کا کہنا تھا کہ جائلز کلارک نے لاہور میں پی ایس ایل کا فائنل دیکھ کر ورلڈ الیون ٹیم لانے کی یقین دہانی کروائی، یہ ٹیم پاکستان کے مختلف شہروں میں 4 میچز کھیلے گی۔

مزید پڑھیں: ’’ پاک بھارت کرکٹ سیریز کا فیصلہ مودی کریں‌ گے ‘‘

عہدے سے مستعفیٰ ہونے کے سوال پر شہریار خان نے کہا کہ ’’اگست کے بعد عہدے پر نہیں آؤں گا اور دوبارہ کرکٹ بورڈ کا چیئرمین بننے سے انکار کردوں گا تاہم اگر کام جاری رکھنے کی ہدایت دی گئی تو دیکھا جائے گا، قانون کے مطابق بورڈ کے نئے چیئرمین کو منتخب کیا جائے گا‘‘۔

 اُن کا کہنا تھا کہ محمد عرفان کو کم سزا اس لیے دی گئی کہ انہوں نے اپنی غلطی تسلیم کی اسی طرح محمد عامر نے بھی اپنی غلطی تسلیم کی جبکہ محمد آصف نے عدالتی فیصلے کے بعد اپنی غلطی کا اعتراف کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں