The news is by your side.

Advertisement

‘ہم چاہتے ہیں اوپن اور کھلا ووٹ لکھ دیاجائے’

مشیر پارلیمانی امور بابر اعوان نے آئینی ترمیمی بل ایوان میں پڑھ کر سنا دیا۔

بابر اعوان نے مجوزہ ترامیم میں بتایا کہ آرٹیکل 59 پر میثاق جمہوریت میں دستخط کیےآج اس سےبھاگ رہےہیں یہ چاہتےہیں کہ ایک بار پھر ووٹوں کی منڈی لگے لیکن ترمیم سےپارٹی کےخلاف ووٹ نہیں ڈالاجاسکےگا۔

انہوں نے کہا کہ آرٹیکل63میں تارکین وطن کوالیکشن لڑنےکی اجازت دی جارہی ہے اگرتارکین وطن کامیاب ہوں گےتوشہریت چھوڑنا ہو گی۔

بابراعوان نے ایوان کو بتایا کہ آرٹیکل 226 میں بھی ترمیم تجویزکی گئی ہے، وزیراعظم،وزیراعلیٰ کےالیکشن اوپن ووٹ سے ہوتے ہیں اسی طرح سینیٹ الیکشن بھی اوپن ووٹ کےذریعے ہوناچاہیے۔

ان کا کہنا تھا کہ ایوان میں صرف بل کےبارےمیں بات کرناچاہتاہوں، آئین میں سینیٹ الیکشن میں لفظ سنگل ٹرانسفر یبل ووٹ لکھاہے ہم چاہتےہیں اس لفظ کی جگہ اوپن اورکھلاووٹ لکھ دیاجائے۔

انہوں نے مزید کہا کہ سینیٹ الیکشن میں خریدوفروخت ہوتی ہےسب کومعلوم ہے سب نےکہا ہے سینیٹ الیکشن میں پیسوں کاعمل دخل ختم کریں گے، عمران خان آئینی ترمیم سے خرید و فروخت بند کرنا چاہتے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں