The news is by your side.

Advertisement

‘ہم کل تحریک عدم اعتماد لےکر اسمبلی میں جا رہے تھے’

پیپلزپارٹی کے رہنما نبیل گبول نے کہا ہے کہ ہم کل تحریک عدم اعتمادلےکراسمبلی میں جارہےتھے ‏حلفیہ کہتاہوں آج ایم کیوایم پاکستان پی ٹی آئی کیساتھ نہیں تھی۔

اے آر وائی نیوز کے پروگرام پاور پلے میں گفتگو کرتے ہوئے نبیل گبول نے کہا کہ میں سمجھتاہوں ‏ایم کیوایم ممبران نے پی ٹی آئی کو ووٹ نہیں دیے ہم نےخریدا یا بیچاحکومت کوسینیٹ کی ‏نشست لینےنہیں دی، ہم حکومت کو چیئرمین سینیٹ بھی لینےنہیں دیں گے، ہمیشہ خاموشی ‏سےسیاست کرتےجیت جاتےاورنکل جاتےہیں۔

پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر علی زیدی نے کہا کہ بہت سی چیزوں کی شناخت ‏ہوگئی ہے، میں نے وزیراعظم عمران خان کونام دےدیئےہیں، 3ممبران وہی ہوں گےجوعلی ‏حیدرگیلانی کے ساتھ ویڈیومیں تھے۔

ان کا کہنا تھا کہ حکومت کےعلاوہ الیکشن کمیشن کی بھی بہت ذمہ داریاں تھیں، شفافیت ‏کیلئےہی ہم نےاتنی جدوجہد کی اور کر رہےہیں ایک نشست ہارےہیں جس پر اپوزیشن ‏اتناشورکررہی ہے، آئینی طریقہ کارکےمطابق عدم اعتماد کاووٹ لینےکافیصلہ کیا۔

ن لیگ کے مفتاح اسماعیل نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ضمیر کےمطابق ووٹ دیاگیاحکومت پرعدم ‏اعتمادہے، حکومت کوضمنی انتخابات کےبعدسینیٹ کی اہم نشست پرشکست دی، پی ٹی آئی ‏کےممبران پرپیسےدےکرٹکٹ لینے کے الزامات لگے، عبدالقادر پر70کروڑروپےدےکر ٹکٹ لینےکا ‏الزام لگا جب کہ سیف اللہ ابڑو پر 30کروڑ روپے دینے کا الزام لگا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں