The news is by your side.

Advertisement

شہزادہ ہیری و میگھن اور شہزادی ڈیانا کی الم ناک زندگی میں کیا مماثلت ہے؟

لندن: اگرچہ اب شہزادہ ہیری اور ان کی اہلیہ میگھن مارکل کے شاہی خاندان سے سارے ناتے ٹوٹ چکے ہیں لیکن عالمی میڈیا میں یہ بازگشت سنائی دے رہی ہے کہ ان کی زندگی میں لیڈی ڈیانا کی الم ناک زندگی کی مماثلت دکھائی دینے لگی ہے۔

یہی وجہ ہے کہ ہیری اور میگھن کو شہزادی ڈیانا کی زندگی سے سبق سیکھنے کا مشورہ دیا جانے لگا ہے۔

شہزادی ڈیانا نے برطانیہ کے شاہی خاندان میں کیسی الم ناک زندگی گزاری، اس داستان سے آگاہی رکھنے والے اب شاہی خاندان کو خیرباد کہہ کر امریکا جا بسنے والے پرنس ہیری اور میگھن مارکل کی جوڑی کی زندگی میں بھی وہی نقوش دیکھ رہے ہیں۔

کچھ لوگ پرنس ہیری کو انھی راستوں پر گامزن ہونے پر تنبیہ بھی کر رہے ہیں، جن راہوں پر ان کی والدہ نے شاہی زندگی کے ہنگامہ خیز دور میں قدم رکھا تھا، اور پھر انھیں ایک افسوس ناک انجام سے دوچار ہونا پڑا۔

تو کیا پرنس ہیری واقعی شہزادی ڈیانا کے نقش قدم پر چل پڑے ہیں؟ ڈیلی میل سے گفتگو کرتے ہوئے آنجہانی لیڈی ڈیانا کے سابق پرائیویٹ سیکریٹری پیٹرک جیفسن نے کہا اس وقت کے شاہی خاندان کے کچھ افراد کے رجحانات پینوراما انٹرویو کے بعد والی شہزادی ڈیانا کے ہیں۔

لیڈی ڈیانا کے حوالے سے پرانا تنازع دوبارہ کھڑا ہوگیا

یاد رہے کہ 1995 میں لیڈی ڈیانا نے بی بی سی کو ایک انٹرویو دیا تھا جو پینوراما انٹرویو کے نام سے مشہور ہے، اس میں ڈیانا نے کھل کر بات کی تھی اور اپنے ساتھ پیش آنے والے سخت اور تلخ واقعات سمیت شاہی محل کی صورت حال سے مفصل طور پر دنیا کو آگاہ کیا تھا۔

ڈیانا کے مشیر پیٹرک جیفسن نے واضح طور پر کہا کہ جو رجحانات لیڈی ڈیانا تھے اب وہ ان کے چھوٹے بیٹے میں بھی دریافت ہو رہے ہیں۔ جیفسن نے اس بات پر تنقید بھی کی کہ محل سے دور جانے پر آپ کو ویسا احترام اور شہرت نہیں مل سکتی۔

انھوں نے تنبیہ کی کہ شارٹ کٹ لینا اگرچہ بہت آسان ہے، پبلک ریلیشن ماہرین کی مدد سے آپ لوگوں کو اپنی طرف متوجہ کر لیں گے لیکن یاد رہے کہ آپ وہ حد بھی پار کر سکتے ہیں جسے پار کرنا اچھا نہیں ہوتا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں