The news is by your side.

Advertisement

’ملکی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے گندم درآمد کرنا پڑے گی‘

اسلام آباد: وفاقی وزیر برائے خوراک فخر امام نے کہا ہے کہ ملکی ضروریات کو پورا کرنے کے لیے رواں سال گندم درآمد کرنا پڑے گی۔

قومی اسمبلی کے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے فخر امام کا کہنا تھا کہ پاکستان میں گندم، کپاس اور مکئی سمیت پانچ فصلیں ہر سال تیار ہوتی ہیں، رواں سال ہماری ضرورت سے10سے15لاکھ ٹن گندم کی  پیداوار کم ہوئی۔

اُن کا کہنا تھا کہ ’ملکی ضروریات کو پارا کرنے کے لیے رواں سال گندم درآمد کرنا پڑے گی، جس کے لیے متعلقہ اداروں سے درخواستیں بھی طلب کرلی ہیں‘۔

وزیر خوراک نے ایوان کو بتایا کہ گندم 8 ہفتے تک درآمد ہونا شروع ہوجائے گی، صوبہ پنجاب، سندھ اور بلوچستان نے گندم کی خریداری کا ہدف مکمل کرلیا جبکہ خیبرپختونخواہ اور پاسکو گندم خریداری کا ٹارگٹ پورا نہیں کرسکے۔

فخر امام کا مزید کہنا تھا کہ ’دنیافصلوں کی پیداوارسےمتعلق ہائی ویلیو ٹارگٹ کی طرف جارہی ہے جبکہ ہم 70سال سے کم سے کم ہدف کی طرف جارہے ہیں جو مستقبل کے لیے اچھی بات نہیں ہے‘۔

Comments

یہ بھی پڑھیں