site
stats
پاکستان

سفید پشت والے گدھ کی پاکستان میں پہلی مرتبہ کامیاب افزائش نسل

لاہور:ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان نے چھانگا مانگا میں قائم کردہ کنزرویشن سینٹر میں معدومیت سے دوچارسفیدپشت والے گدھ کی پاکستان میں پہلی مرتبہ کامیاب افزائش نسل کی ہے۔

اس سال فروری کے آغاز میں چھانگا مانگا فارسٹ ریزرو میں قائم کردہ کنزرویشن سینٹرمیں گدھ کے دو چوزے پیدا ہوئے، سفیدپشت والے گدھ کی نسل معدومیت کے شدید خطرے سے دوچار ہے اور 1990 سے لیکر اب تک پاکستان، بھارت اور نیپال میں ان کی 90 فیصد سے زائدآبادی کا خاتمہ ہوچکا ہے ۔

ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان کے ڈائریکٹر جنرل ، حماد نقی خان نے گدھ کی کامیاب افزائش نسل کے لیے کام کرنے والی ٹیم کو مبارکباد یتے ہوئے کہا کہ سفیدپشت والے گدھ کی کامیاب افزائش نسل اسے معدومیت کے دہانے سے واپس لانے والی جدوجہد کی ایک اہم کامیابی ہے ۔ جوکہ معدومیت کے خطرے سے دوچار گدھوں کی آبادی میں اضافے کے لیے ایک اہم قدم ہے۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ یہ کنزرویشن سینٹرمیں ان پرندوں کی دیکھ بھال کے پروٹوکول اور دیکھ بھال کے اعلی معیار کی بھی عکاسی کرتا ہے۔

اس کنزرویشن سینٹر کے ساتھ ساتھ ڈبلیو ڈبلیو ایف پاکستان نے 2012میں نگر پارکر، سندھ، میں سفید پشت اور لمبی چونچ والے گدھوں کے لیے ایک محفوظ علاقہ بھی قائم کیا ہے جہاں پر آخری بچے ہوئے گدھوں کو ان کی قدرتی ماحول میں تحفظ دیا جا رہا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top