The news is by your side.

Advertisement

کورونا کے مریضوں پر ہائیڈروکسی کلوروکوئن کا استعمال ،عالمی ادارہ صحت نے بڑا اعلان کردیا

جنیوا : عالمی ادارہ صحت(ڈبلیو ایچ او) نے کورونا وائرس کے علاج کیلئے ملیریا ڈرگ ہائیڈروکسی کلوروکوئن پر ٹرائل  روکنے کا اعلان کردیا اور کہا اس دوا کے استعمال سے COVID-19 مریضوں کی اموات میں کمی نہیں آئی.

تفصیلات کے مطابق عالمی ادارہ صحت نے ہائیڈروکسی کلوروکوین پر تحقیق روک دی، ہائیڈروکسی کلوروکوین کی آزمائش ختم کرنے کا فیصلہ ٹرائل کے ڈیٹا اور ایک تحقیق کے نتائج کے بعد کیا گیا جن میں کہا گیا تھا کہ یہ دوا کورونا وائرس کے علاج کے لیے مؤثر نہیں۔

ڈبلیو ایچ او کے بیان میں کہا گیا ہے کہ مطالعات کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ “ہائیڈروکسی کلوروکوین کی وجہ سے اسپتال میں داخل COVID-19 کے مریضوں کی اموات میں کمی نہیں آئی۔

عالمی ادارے کی میڈیکل آفیسر اینا ماریا ہینو ریسٹریپو نے کہا کہ کورونا وائرس کے خلاف اس دوا کے مددگار ہونے کی توقعات لگ بھگ ختم ہوگئی ہیں۔

عالمی ادارہ صحت نے مزید کہا وہ مریض جنہوں نے پہلے ہی ہائیڈروکسی کلوروکوین شروع کردی تھی اور اپنا کورس مکمل نہیں کیا ہے وہ اپنا کورس مکمل کرسکتے ہیں تاہم نگران معالج کی تجویز پر اس کا استعمال روکا جا سکتا ہے۔”

یاد رہے گذشتہ ہفتے امریکی فوڈ اینڈ ڈرگ ایڈمنسٹریشن نے ہنگامی صورت میں کورونا مریضوں کے لیے ہائیڈروآکسی کلوروکوئن کےاستعمال کا اختیار واپس لے لیا تھا ، کیونکہ ایف ڈی اے نے کہا تھا کہ نئے شواہد کی بنیاد اس بات پر یقین نہیں کیا جاسکتا کہ ہائڈروکسی کلوروکین اور اس سے متعلقہ دوا کلوروکین کورونا کے علاج میں موثر ہوسکتی ہے۔

اس سے قبل عالمی ادارہِ صحت نےحفاظتی خدشات کے پیشِ نظر کورونا کے علاج کیلئے ہائیڈروکسی کلوروکوئن کےتجربات معطل کردئیے تھے۔

خیال رہے برطانوی جریدے دی لینسیٹ میں جمعہ کو شائع ہونے والی ایک تحقیق کے مطابق تقریبا ایک لاکھ کورونا وائرس کے مریضوں کے مطالعے میں اینٹی وائرل دوائیوں ہائیڈروکسی کلورو کوئن کے ساتھ ان کا علاج کرنے میں کوئی فائدہ نہیں ہوا ہے بلکہ مریضوں کی اموات کے امکانات میں اضافہ ہوا ہے۔

اس سے قبل امریکہ میں ہونے والی حالیہ تحقیق میں انکشاف ہوا تھا کہ کرونا وائرس مریض کے علاج کے لیے استعمال کی جانے والی ملیریا کی ادویات بے اثر اور اموات میں اضافے کا باعث ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں