The news is by your side.

Advertisement

کرونا وائرس، عالمی ادارہ صحت کا ماہرین کو چین بھیجنے کا اعلان

جینیوا: عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے سربراہ نے کرونا وائرس کی نشاندہی کے لیے عالمی ٹیم چین بھیجنے کا اعلان کردیا تاکہ وبا پر مزید تحقیق کی جاسکے۔

ڈبلیو ایچ او کے سربراہ کا کہنا تھا کہ ’ کرونا کی شدت میں تیزی سے اضافہ ہوتا جارہا ہے جس کا ثبوت یہ ہے کہ گزشتہ ہفتے دنیا بھر میں چار لاکھ سے زائد کرونا کے کیسز رپورٹ ہوئے‘۔

عالمی ادارہ صحت کے سربراہ ڈاکٹر ٹیڈ روس کا کہنا تھا کہ مرض ابھی اپنے عروج پر نہیں پہنچا مگر اُس کے باوجود وبا کی شدت میں تیزی آتی جارہی ہے، گزشتہ کچھ ماہ میں کرونا پھیلنےکے پہلے مرکزکا بڑاچرچا رہا‘۔

اُن کا کہنا تھا کہ ڈبلیوایچ اوکی ٹیم اگلی دستیاب پرواز سےچین جانےکیلئے تیارہے، جہاں چینی ماہرین کے ساتھ مرض کےمقام کی نشاندہی کیلئےمنصوبہ تیارکریں گے اور پھر  اس بات پر بھی غور کیا جائے گا کہ یہ وائرس کہیں جانوروں سے انسانوں میں تو منتقل نہیں ہوا۔

مزید پڑھیں: عالمی ادارہ صحت نے دنیا کے لیے خطرے کی گھنٹی بجادی

یاد رہے کہ دنیا بھر میں اب تک کرونا کے مصدقہ کیسز کی تعداد ایک کروڑ 16 لاکھ سے تجاوز کرچکی ہے جبکہ اموا ت کی تعداد بھی اضافے کے بعد 5 لاکھ 39 ہزار 993 تک پہنچ چکی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ برس دسمبر میں چین کے شہر ووہان میں کرونا کے کیسز رپورٹ ہوئے تھے جس کے بعد دیکھتے ہی دیکھتے یہ وائرس دنیا بھر میں پھیل گیا۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کرونا کو چینی یا ووہان وائرس کہتے ہیں اور اُن کا ماننا ہے کہ چین نے دانستہ طور پر دنیا کو آگاہ نہیں کیا جس کی وجہ سے امریکا سمیت دنیا کے تمام ممالک کو بڑے نقصان کا سامنا کرنا پڑا۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں