The news is by your side.

Advertisement

عالمی ادارہ صحت نے کورونا کی دوسری خطرناک لہر کا انتباہ جاری کردیا

نیویارک : عالمی ادارہ صحت نے کورونا کی دوسری لہر کا انتباہ جاری کردیا اور کہا کہ حفاظتی اقدامات ترک کرنے پر دوسری لہر کا سامنا ہوسکتا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سربراہ ڈبلیو ایچ او نے کورونا کیسز میں کمی والے ممالک کو خبردار کیا ہے کہ حفاظتی اقدامات ترک کرنے پر دوسری لہر کا سامنا ہو سکتا  ہے، دنیا اب بھی کورونا پھیلاؤ کی پہلی لہر کے وسط میں ہے، بعض ممالک میں کیسزکم جبکہ کچھ ممالک میں بڑھ رہے ہیں۔

مائیک ریان کا کہنا تھا کہ جنوبی امریکا، جنوبی ایشیا اور افریقہ میں کیسز بڑھ رہے ہیں، وبائی مرض اکثر لہروں میں آتاہے، جہاں وبا کی لہر ختم ہوئی، وہاں سال کے آخر میں کیسز سامنے آسکتے ہیں، حفاظتی اقدامات ترک کرنے پر کیسز تیزی سے بڑھ سکتے ہیں۔

یاد رہے کہ عالمی ادارہ صحت (ڈبلیو ایچ او) کے ڈاکٹر مائیک ریان نے متنبہ کیا تھا کہ کورونا وائرس شاید کبھی ختم نہیں ہوسکتا، ہمیں مہلک مرض ’ایچ آئی وی‘ کی طرح کرونا کے ساتھ بھی رہنا سیکھنا ہوگا۔

مزید پڑھیں : ’کرونا شاید کبھی ختم نہیں ہوگا‘ عالمی ادارہ صحت نے خبردار کردیا

ان کا کہنا تھا کہ دنیا بھر سے وائرس کا ہمیشہ کے لیے خاتمہ ممکن نظر نہیں آرہا اور نہ ہی یہ کہا جاسکتا ہے کہ وبا پر کب اور کس حد تک قابو پایا جاسکتا ہے اور ایچ آئی وی کی مثال دیتے ہوئے کہا تھا کہ یہ وائرس بھی ختم نہیں ہوا ہے۔

انہوں نے کہا کہ کروناوائرس کو کنٹرول کرنے کے لیے وسیع پیمانے پر کوششیں درکار ہیں، وبا کی ویکسین دریافت ہوجائے تو مہلک وائرس کو کنٹرول کرنے میں معاونت ملے گی، لیکن خاتمے کا فی الحال کچھ نہیں کہہ سکتے۔

ڈاکٹر مائیک ریان نے خدشات کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ جس طرح خسرہ جیسی بیماری کی ویکسین موجود ہے لیکن مرض کا خاتمہ نہیں ہوا اس طرح ہمیں کرونا کے تناظر میں صورت حال کا سامنا کرنا پڑے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں