The news is by your side.

Advertisement

سپریم کورٹ میں فوادچوہدری اور شہبازگل کیوں پھنس گئے؟

ڈپٹی اسپیکر کی رولنگ سے متعلق ازخود نوٹس کیس کا فیصلہ سننے کے لیے سپریم کورٹ کا کمرہ نمبر ایک کھچا کھچ بھرا ہوا تھا تمام نشستیں بھر چکی تھیں۔

کمرہ عدالت میں نشستیں پرُ ہونے کی وجہ سے فوادچوہدری کو بیٹھنے کی جگہ نہ ملی اور انہوں نے کھڑے ہو کر فیصلہ سنا۔ معروف قانون دان بابراعوان بھی کھڑے رہے۔

رولنگ کالعدم، عدم اعتماد برقرار، قومی اسمبلی بحال

کمرہ عدالت کو لاک کرکے ویڈیو اور آڈیو لنک چیک کیا گیا۔ مقدمے میں دلائل دینے والے وکلا بھی دروازے کھلنے کے منتظر رہے، کمرہ عدالت میں داخل ہونے کے لیے وکلا اور پولیس میں دھکم پیل بھی ہوئی۔

فیصلےکے بعد سپریم کورٹ کےاحاطےمیں لیگی کارکنان نعرےبازی کرتے رہے جب کہ شہبازگل اور فوادچوہدری 15 منٹ تک سپریم کورٹ میں پھنسے رہے۔

پولیس نے شہبازگل اور فوادچوہدری کو متبادل راستے سے باہر نکالا۔ پی ٹی آئی رہنما میڈیا ٹاک کیے بغیر ہی عدالت سے روانہ ہوئے۔

Comments

یہ بھی پڑھیں