The news is by your side.

Advertisement

امریکا میں سیاہ فام شخص کے قتل میں ملوث پولیس افسر کی بیوی کا طلاق لینے کا فیصلہ

واشنگٹن : امریکا میں سیاہ فام شخص کے قتل میں ملوث پولیس افسر کی بیوی کا طلاق لینے کا فیصلہ کرلیا ، افسر کی اہلیہ کیلی شوین نے کہا جارج فلائیڈکے قتل پرانتہائی دکھ اورافسوس ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکی ریاست مینیسوٹا میں سیاہ فام شخص جارج فلائیڈ کے قتل میں ملوث پولیس افسر ڈیرک شوین کی بیوی کیلی شوین نے 10سالہ شادی ختم کرنے کا فیصلہ کرلیا اور طلاق کے لئےعدالت میں درخواست دے دی ہے۔

پولیس افسر کی اہلیہ کیلی شوین نے کہا کہ جارج فلائیڈکے قتل پرانتہائی دکھ اورافسوس ہے۔

خیال رہے پولیس افسرڈیرک شوین کو سیاہ فام شخص پرتشدد،ہلاک کرنے کے بعد برطرف کردیا گیا تھا اور واقعے میں ملوث پولیس اہلکار کوگرفتار کرکے قتل کا مقدمہ درج کرلیا گیا ہے۔

یاد رہے سیاہ فام شخص کی پولیس کےہاتھوں ہلاکت کے بعد منی پولیس سےشروع ہونےوالےاحتجاج کادائرہ امریکا بھرمیں پھیل گیا ہے ، اس دوران پولیس اسٹیشن سمیت سرکاری ونجی املاک اورگاڑیاں نذرآتش کردی گئی جبکہ توڑ پھوڑ،جلاو گھیراؤ،لوٹ مار کرنے پر درجنوں مظاہرین کو گرفتارکرلیاگیا ہے۔

مینیسوٹا کے مئیر نے نیشنل گارڈز کو طلب کرلیا جبکہ کئی مقامات پر کرفیو نافذ ہے، وائٹ ہاؤس کے سامنے بھی مظاہرین کی بہت بڑی تعداد موجود ہیں ، مظاہرین نے صدرٹرمپ کو پولیس تشدد کے واقعات کا ذمہ دارقرار دےدیا جبکہ ٹرمپ نے جارج فلائیڈ کے لواحقین کو فون کرکے انصاف فراہم کرنے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

واضح رہے امریکی ریاست مینیسوٹا میں پولیس افسران کی کارروائی ایک ویڈیو کے منظر عام آئی تھی ، جس میں ایک سفید فام پولیس اہل کار کو جارج فلائیڈ کی گردن پر گھٹنا دبا کر رکھے دیکھا گیا، جب کہ سیاہ فام شخص اس وقت غیر مسلح تھا اور ، ہاتھ پیچھے کر کے ہتھ کھڑی لگی ہوئی تھی، اس دوران سیاہ فام شخص تکلیف کے عالم میں اسے اٹھنے کے لیے کہتا رہا کہ وہ سانس نہیں لے پا رہا۔

بعد ازاں مینی پولس میں ایک سیاہ فام امریکی جارج فلائیڈ کی موت پر 4 پولیس افسران کو نوکری سے فارغ کر دیا تھا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں