The news is by your side.

Advertisement

18 ویں ترمیم سے ہم نے وزیراعظم کے عہدے کو طاقتور بنایا، بلاول بھٹو

کراچی : چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے حکمران جماعت پر الزامات کی بوچھاڑ کرتے ہوئے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان غریبوں کے مطالبات پر چل رہے ہیں یا صنعتکاروں کے مطالبات پر کام کررہے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے ایک مرتبہ پھر حکمران جماعت پی ٹی آئی پر الزامات لگاتے ہوئے کہا کہ سفید پوش کو بھی دیکھنا پڑے گا کسی کو کوئی ریلیف نہیں ملا، ریلیف صرف کنسٹرکشن انڈسٹری کو ملا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان غریبوں کے مطالبات پر چل رہے ہیں یا صنعتکاروں کے مطالبات پر، ریلیف کے تحت غریب عوام اسکولوں کی فیس کم کرانا چارہے تھے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ وفاقی حکومت نے ہمارے نوٹیفکیشن کو چیلنج کیا، کل بھی کہا ہمارے آرڈیننس پر دستخط کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ مجھے پتہ ہے کہ کس نے کس بنا پر میری جماعت کیسے چھوڑی، وزیر صاحب اپنا سیاسی لوہا منوانے کی کوشش کررہے ہیں، ہم نے غیر سیاسی طریقے سے اپنی عوام کی زندگی بچانی ہے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ خان صاحب کتنے کھرب پتیوں اور کتنے تجارتی لوگوں سے ملے ہیں، آج کے ایک وفاقی وزیر کو وزیر اعظم بننے کا جھانسہ دیکر ہماری پارٹی چھڑوائی گئی۔

انہوں نے کہا کہ شاہ محمود قریشی سندھ کارڈ سے متعلق اپنا بیان واپس لیں، وہ وزیر ہماری جماعت میں تھے تو معلوم ہے کس نے اسے وزیر اعظم بنانے کی لالچ دی۔

بلاول بھٹو کا مزید کہنا تھا کہ جانتے ہیں جب یہ ہمارے وزیر تھے وہ کس کے کہنے پر دوسری جماعت میں گئے، وہی وفاقی وزیر وزیر اعظم بننے کی کوشش کررہے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ ایک وفاقی وزیر عمران خان یا پی ٹی آئی کا نہیں اپنا ایجنڈا چلارہا ہے اور وفاق اپنی ذمہ داریوں سے بےخبر ابھی تک سورہا ہے، ہر مسئلے پر سیاست کرنیوالی وفاقی حکومت ذمہ داریاں پوری کرے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ 18 ترمیم کے ذریعے ہم نے وزیر اعظم کے عہدے کو طاقتور بنایا، ہماری ترمیم آمر کے کالے قانون کو نکالنے کیلئے تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں