The news is by your side.

’سارہ نے وہاج کو تھپڑ مار دیا‘

اے آر وائی ڈیجیٹل کے ڈرامہ سیریل ’وہ پاگل سی‘ میں سارہ نے وہاج کو تھپڑ مار دیا۔

ڈرامہ سیریل ’وہ پاگل سی‘ میں بابر علی (احسن حیات)، حرا خان (سارہ)، زباب رانا (شازما)، عمر شہزاد (وہاج)، سعد قریشی (ذہین)، اسماعیل تارا، شازیہ گوہر ودیگر فنکار اداکاری کے جوہر دکھا رہے ہیں۔

ڈرامے کی کہانی احسن حیات اور ان کی بیٹی سارہ کے گرد گھومتی ہے جن کے بزنس کو ہتھیانے کے لیے شازما ان سے دوسری شادی رچاتی ہے تو دوسری طرف وہاج بھی انہیں دھوکا دینے کے لیے سارہ سے شادی کے خواہشمند ہوتے ہیں لیکن سارہ ذہین سے شادی کرلیتی ہیں۔

گزشتہ قسط میں دکھایا گیا کہ ’سارہ بووا کو فون کرتی ہیں تو وہ ان سے خیریت دریافت کرتی ہیں لیکن سارہ کہتی ہی کہ خیریت نہیں ہے میں بالکل تنہا ہوگئی ہوں جتنی ضرورت مجھے آپ کی آج ہے اس سے پہلے کبھی نہ تھی۔‘

سارہ کہتی ہیں کہ ’میں گھر سے بے گھر ہوگئی ہوں میرے سر پر کوئی سایہ نہیں ہے میں ذہین کے گھر واپس نہیں جانا چاہتی میں آپ کے پاس آرہی ہوں۔‘

وہ بات کرکے جارہی ہوتی ہیں کہ وہاج گھر میں داخل ہوجاتے ہیں تو سارہ کہتی ہیں کہ ’تم یہاں کیا کررہے ہو۔‘

وہاج کہتے ہیں کہ ’میں تم سے ملنے آیا تھا لیکن شاید تم کہیں جارہی ہو میں جانتا ہوں کہ تمہیں نوکری سے نکال دیا گیا ہے یہ فلیٹ بھی اب تمہارا نہیں رہا ہے کہاں جاؤ گی میں تمہیں اس سے اچھا فلیٹ لے کر دوں گا اور تمہیں نوکری کرنے کی کیا ضرورت ہے میرے پاس ہر تمہیں ہر سہولت میسر ہوگی۔‘

سارہ کہتی ہیں کہ ’سمجھ تو میں گئی ہوں لیکن اپنے منہ سے اطراف کرلو گے تو بہتر ہوگا تم اور فرحان مجھے مل کر ٹریپ کررہے تھے۔‘

وہاج انجان بن کر کہتے ہیں کہ میں کسی فرحان کو نہیں جانتا لیکن تمہاری ہر خبر رکھتا ہوں تم سے محبت جو کرتا ہوں۔

سارہ غصے میں آجاتی ہیں اور کہتی ہیں کہ اپنی بکواس بند کرو مجھے تمہاری گھٹیا باتوں میں کوئی دلچسپی نہیں اپنی دو ٹکے کی آفر اپنے پاس رکھو۔‘

وہاج سارہ کو زبردستی روکتے ہیں تو وہ انہیں تھپڑ مار دیتی ہیں اور کہتی ہیں کہ میں تمہارے منہ پر تھوکنا بھی پسند نہیں کرتی۔

وہ سارہ کو بالوں سے پکڑ کر کہتے ہیں کہ ’پیار کی زبان تمہیں سمجھ نہیں آتی لیکن ایک بات یاد رکھو مجھے اور بھی طریقے آتے ہیں تمہاری بھلائی اسی میں ہے کہ میری بات مان جاؤ۔‘

کیا سارہ اور ذہین کے درمیان تلخیاں دور ہوجائیں گی، کیا احسن شازما اور وہاج کی مکاری کو سمجھ جائیں گے، یہ جاننے کے لیے وہ پاگل سی کی اگلی قسط دیکھیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں