site
stats
پاکستان

لاہور: جناح اسپتال میں بوڑھی مریضہ کا ٹھنڈے فرش پر علاج، مریضہ دم توڑ گئی

لاہور: پنجاب کے صوبائی دارالحکومت لاہور کے جناح اسپتال میں مریضہ نے فرش پر تڑپ تڑپ کر جان دے دی۔ اے آر وائی نیوز نے توجہ دلائی لیکن حکام میٹنگ میں مصروف رہے۔

تفصیلات کے مطابق قصور کی رہائشی زہرہ بی بی کو رات ساڑھے 3 بجے دل میں تکلیف محسوس ہونے لاہور کے جناح اسپتال لایا گیا۔ اسپتال کی انتظامیہ نے ایمرجنسی یا وارڈ میں مریضہ کو بستر نہ دیا اور خاتون کو راہداری کے فرش پر تڑپتا چھوڑ دیا۔

بوڑھی خاتون کے اہلخانہ دہائیاں دیتے رہے۔ روتی، بلکتی فریاد کرتی بیٹی کی دہائیوں نے سب کو رلا دیا لیکن اسپتال انتظامیہ کو ترس نہ آیا۔

تقریباً ساڑھے 3 گھنٹے بعد صبح ساڑھے 6 بجے علاج کے نام پر ایک ڈرپ خاتون کو اسپتال کے فرش پر ہی لگادی گئی۔ عزیر و اقاراب کو کچھ قرار آیا مگر حالت بدستور تشویش ناک رہی۔

اےآر وائی نیوز نے صوبائی مشیر صحت خواجہ سلمان رفیق سے لے کر اسپتال کے ایم ایس ڈاکٹر ظفر تک سب سے رابطے کی کوشش کی، لیکن گڈ گورننس کا راگ الاپنے والے میٹنگ کا بہانہ کر کے معاملے سے دور رہے۔

بالآخر اسپتال میں 10 گھنٹے دل کا درد براداشت کرتی زہرہ پر موت کو ترس آگیا اور موت نے اسے آ لیا۔

زندگی میں تو زہرہ کو بیڈ نہ ملا لیکن دم توڑتے ہی اسپتال والوں نے زہرہ بی بی کو اسٹریچر پر ڈال دیا۔

اے آر وائی نیوز نے اسپتال میں دم توڑنے والی خاتون کے فرش پر علاج کی خبر سب سے پہلے چلائی۔ معاملے پر ایکشن کے لیے حکام سے مسلسل رابطے کی کوشش کی گئی، لیکن صوبائی وزیر رابطے پر آئے اور نہ اسپتال انتظامیہ کے کسی فرد نے کان دھرا۔

اے آر وائی نیوز مسلسل حکام کو معاملے سے آگاہ کرتا رہا لیکن کسی نے نوٹس نہ لیا۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top