The news is by your side.

Advertisement

سکھر، قرنطینہ میں مریضہ نے کئی افراد کی زندگی خطرے میں ڈال دی

سکھر: سندھ کے شہر سکھر میں کرونا وائرس کی مریضہ نے قرنطینہ میں کئی افراد کی زندگیوں کو خطرے میں ڈال دیا۔

اے آر وائی نیوز کی رپورٹ کے مطابق سکھر قرنطینہ میں موجود خاتون دوبارہ کرونا وائرس کا ٹیسٹ کرنے پر مشتعل ہوگئی اور طبی عملے پر حملہ کردیا۔

قرنطینہ میں خاتون مریضہ نے ٹیسٹ کٹس اور دیگر سامان اٹھا کر پھینک دیا، مریضہ کے اکسانے پر کرونا وائرس میں مبتلا کئی افراد اپنے کمروں سے باہر آگئے۔

ڈاکٹر کا کہنا ہے کہ ہنگامہ آرائی کے دوران کئی افراد ایک دوسرے کے قریب آئے تاہم صورت حال پر قابو پالیا گیا ہے۔

مزید پڑھیں: کروناوائرس: بلوچستان حکومت کا کنٹینرز پر مشتمل اسپتال بنانے کا فیصلہ

نمائندہ اے آر وائی نیوز کے مطابق پہلے قرنطینہ میں موجود ان افراد کا کرونا ٹیسٹ منفی آیا تھا، ان کا دوبارہ ٹیسٹ کیا گیا تو 34 افراد ٹیسٹ کا مثبت نکلا۔

واضح رہے کہ سندھ حکومت کی جانب سے کرونا وائرس کے مریضوں کے لیے سکھر میں قرنطینہ سینٹر بنایا گیا جہاں مریضوں کو طبی امداد فراہم کی جارہی ہیں۔

یاد رہے کہ ملک میں کرونا وائرس کے مریضوں کی تعداد ایک ہزار 495 ہوگئی ہے، پنجاب میں 557، سندھ 469، کے پی میں 188 کرونا کے مریض ہیں، بلوچستان میں 133، جی بی 107، اسلام آباد 39، آزاد کشمیر میں 2 مریض ہیں۔

ملک میں کرونا وائرس کے باعث اموات 12 ہوگئی اور 7 مریضوں کی حالت تشویش ناک ہے جبکہ صحت یاب مریضوں کی تعداد 25 ہے۔

fb-share-icon0
Tweet 20

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں