The news is by your side.

Advertisement

سلووینیا میں خاتون نے انشورنش کی رقم کیلئے اپنا ہاتھ کٹوا دیا

لیوبلیانا : سلووینیا کی پولیس نے غلط بیانی سے انشورنش کی رقم حاصل کرنے والی خاتون کو دھوکا دہی کے الزام میں گرفتار کرلیا۔

تفصیلات کے مطابق دنیا میں آج بھی ایسے افراد موجود ہیں معمولی سی رقم حاصل کرنے کےلیے خود اپنے اعضاء بھی کاٹ سکتے ہیں ایسا ہی واقعہ یورپی ملک سلووینیا میں پیش آیا جہاں ایک خاتون نے انشورنش کی رقم کی حاصل کرنے کےلیے اپنا ہاتھ کاٹ دیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ سلووینیا کے دارالحکومت لیوبلیانا میں پولیس نے 21 سالہ خاتون کو حراست میں لیا ہے کہ جس نے اپنے اہل خانہ کی مدد سے اپنا ایک ہاتھ کاٹ کر انشورنش کی رقم حاصل کی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ گرفتار خاتون نے کچھ ماہ قبل ہی انشورنش کی مد میں 4 لاکھ یورو معاوضہ اور انشورنش پالیسی کے تحت تقریباً 3 ہزار یورو ماہانہ وصول کیے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ پولیس نے مذکورہ خاتون اس کے اہلخانہ کے چار افراد کو رواں برس کے آغاز پر حراست میں لیا تھا لیکن کچھ روز بعد دو افراد کو رہا کردیا تھا۔

پولیس نے میڈیا کو بتایا کہ خاتون نے گھر میں آرے سے ہاتھ کاٹا جس کے بعد اہلخانہ اسے اسپتال لے گئے جہاں انہوں نے بتایا کہ خاتون لڑکیاں کاٹے ہوئے زخمی ہوگئی۔

پولیس کا کہنا تھا کہ ملزمان خاتون کا کٹا ہوا ہاتھ گھر میں چھوڑ گئے تھے تاکہ جھوٹ کو حقیقت میں بدل سکیں لیکن حکام کو مذکورہ افراد کے بیان پر شک ہوا جس پر حکام اور پولیس نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے گھر سے ہاتھ برآمد کیا۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ اسپتال حکام نے کامیاب آپریشن کے بعد خاتون کا ہاتھ دوبارہ جوڑ دیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا ہے کہ اگر گرفتار خاتون اور اس کے معاونت کاروں پر دھوکا دہی کا الزام ثابت ہوگیا تو انہیں‌ کم از کم اآٹھ برس قید کی سزا کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے.

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں