site
stats
سندھ

خواتین پرحملے کے ملزم کی شناخت ہوگئی، وزیراعلیٰ سندھ کا دعویٰ

cm sindh

کراچی : وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے دعویٰ کیا ہے کہ خواتین پر حملوں میں ملوث ایک ملزم کی شناخت ہوگئی ہے، بہت جلد اصلی ملزم کو گرفتار کر کے قوم کو خوشخبری دیں گے۔

یہ بات انہوں نے کراچی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہی، مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ کراچی کے مختلف علاقوں میں خواتین پرحملہ کرنے والےملزم کے واضح ثبوت مل گئے ہیں، دو ملزمان پر واضح شک ہے کہ وہ حملوں میں ملوث ہیں۔

وزیراعلیٰ سندھ نے صحافیوں کو بتایا کہ ایک ملزم کا تعلق ساہیوال جبکہ دوسرے حملہ آور کا تعلق کراچی سے ہے، ساہیوال سے تعلق رکھنے والا ملزم تاحال فرار ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ساہیوال کارہائشی ملزم ایسی 30وارداتیں پہلے بھی پنجاب میں کرچکا ہے، مزید حقائق تحقیقات کے بعد سامنے لائےجائیں گے۔

مراد علی شاہ نے کہا کہ پولیس معاملےکی تہہ تک پہنچ رہی ہے، حملہ آوروں کے گرد گھیرا تنگ کرلیا گیا ہے، بہت جلد اصلی ملزم کو گرفتار کرکے قوم کو خوشخبری دیں گے۔

ملزم کو نفسیاتی کہنے والی پولیس خود نفسیاتی بن گئی

واضح رہے کہ ایک چاقو باز نے کراچی پولیس کو تگنی کاناچ نچادیا، ملزم کو نفسیاتی قراردینے والی پولیس خود نفسیاتی بن گئی، بارہ دن میں پندرہ خواتین کو لہولہان کرنےوالاکون ہے کیاچاہتاہے؟پولیس کی پیشرفت میں کوئی پیشرفت ہی نہیں ہوئی،۔

ایک چاقو باز نے کراچی پولیس کو تگنی کاناچ نچا دیا، پولیس ملزم کے بارے میں تاحال ایک لفظ بھی نہ جان سکی کہ ملزم ایک ہے یا پوراگروہ؟

کراچی پولیس کی اس بارے میں بھی رائے بھی حتمی نہیں۔ باجوڑی محلےکی سی سی ٹی وی فوٹیج نےپولیس کی مشکلات میں مزیداضافہ کردیا،ملزم بارہ دن میں تین بار حلیہ تبدیل کرچکا ہے۔

شلوارقمیض زیب تن کرکےبھی ایک خاتون پر حملہ کیا کبھی پولیس حکام کہتےگرفتاری کیلئےمختلف زاویوں پر تحقیقات جاری ہیں توکبھی جلد گرفتاری کادعوی کردیتےہیں۔

وزیرداخلہ سندھ ہو یا صوبائی وزیر اطلاعات سندھ درد سر بنے چاقو باز نے صوبائی حکومت کو بھی پریشان کر رکھا ہے۔

گلستان جوہر سمیت کراچی کے مختلف علاقوں کی خواتین یہ سوال کررہی ہیں کہ ایک چھلاوے کو پکڑنےکیلئےکتنے تھانوں کی پولیس اورایجنسیاں درکارہوں گی؟

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top