The news is by your side.

Advertisement

خواتین پرحملے، ملزم ایک نہیں، گروہ کے ملوث ہونے کا انکشاف

کراچی : خواتین پر چھری سے حملوں میں نیا انکشاف بھی منظرعام پر آگیا۔ پولیس نے دعویٰ کیا ہے کہ حملہ آور ایک شخص نہیں بلکہ ان وارداتوں میں پورا گروہ ملوث ہے، باجوڑی محلے میں حملے کی سی سی ٹی وی فوٹیج اے آر وائی نیوز نے حاصل کرلی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی میں خواتین پر چھری سے حملوں میں نیا انکشاف ہوا ہے، حملہ کرنے والا اکیلا نہیں بلکہ پورا گروہ سرگرم ہے۔

اے آر وائی نیوز کو باجوڑی محلے میں حملے کی ملنے والی فوٹیج میں دیکھا جاسکتا ہے کہ موٹرسائیکل سوارملزم نے سفید شلوارقمیص پہن رکھی ہے، ملزم نے پینٹ شرٹ نہیں پہنی ہوئی، نہ ہی سر پر ہیلمٹ ہے۔

اس کے علاوہ کل کے واقعات کے بعد واضح ہوگیا کہ چھرامار ایک ملزم نہیں گروہ سرگرم ہے، واضح رہے کہ آج پھر گلستان جوہر میں راڈو بیکری کے قریب موٹرسائیکل سوار حملہ آور نے خاتون پر چھری سے وار کیا۔

نجی اسپتال کے ڈاکٹر نے بتایا کہ خاتون کو مزاحمت کرنے پر ہاتھ اور کمر پر تیز دھار آلے کے زخم آئے ہیں، ذرائع کے مطابق پولیس کی بھاری نفری گلستان جوہر کے مختلف علاقوں میں تعینات کردی گئی ہے۔ ملزم کی گرفتاری کی کوششیں تیز کردی گئی ہیں لیکن ملزم اب تک قانون کی گرفت سے دور ہے۔

حملہ آور دس دن میں بارہ سے زائد خواتین کو تیزدھار آلے سے زخمی کرچکا ہے، ایک طرف چھرے مار حملے کررہا ہے تو دوسری طرف پولیس کے دعوؤں میں بھی اضافہ ہوتا جارہا ہے۔


مزید پڑھیں: ایک اورخاتون پرچھری سے حملہ، تعداد بارہ ہوگئی، ملزم آزاد


پہلے ایڈیشنل آئی جی نے ملزم کی گرفتاری کی نوید سنائی لیکن چند گھنٹے بعد پولیس نے یو ٹرن لے لیا، ایڈیشنل آئی جی مشتاق مہر نے کہا کہ ملزم کی گرفتاری کے لئے اقدامات کررہےہیں۔

انہوں نے بتایا کہ ڈی آئی جی سی آئی اے کی سربراہی میں ٹیم تشکیل دے دی گئی ہے، ملزم کی گرفتاری پرپانچ لاکھ روپےانعام مقررکیا گیاہے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں