آواز کی دوگنی رفتار سے اڑنے والا طیارہ Fastest Passenger Plance
The news is by your side.

Advertisement

آواز کی دگنی رفتار سے اڑنے والا طیارہ

نیویارک: امریکا کی نجی کمپنی نے ایسا مسافر بردار جہاز تیار کیا ہے جو اب تک  تیز ترین اڑنے والا طیارہ سمجھا جارہا ہے۔ منتظین کا دعویٰ ہے کہ  یہ آواز کی دگنی رفتار سے اڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے اور اس کی آزمائشی پرواز کامیاب رہی۔

تفصیلات کے مطابق امریکا کی نجی کمپنی ’’ہوم ٹیکنالوجی‘‘ نے کمرشل سپرسؤنگ جہاز تیار کیا ہے جو 2 ہزار کلومیٹر فی گھنٹہ سے زائد رفتار سے اڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

اس طیارے کا ماڈل جنگی طیارے کی طرز کا ہے تاہم اسے کمرشل استعمال یعنی مسافروں کی آمد و رفت کے لیے تیار کیا گیا ہے، طیارے کی پہلی آزمائشی پرواز کامیابی سے مکمل کرلی گئی ہے۔

plane-1

متنظمین کا کہنا ہے کہ سپرسونگ طیارہ آواز کے مقابلے میں 2.2 گنا زیادہ یعنی 2334 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے اڑنے کی صلاحیت رکھتا ہے، طیارے میں 3 عدد جدید ترین ٹریوفین جیٹ انجن نصب کیے جائیں گے۔ جہاز کی رفتار کے حساب سے اگر نیویارک سے اسلام آباد تک کا سفر کیا جائے تو یہ مسافت صرف 5 گھنٹے میں مکمل ہوجائے گی۔

plane-2

امریکی میڈیا اسے ’’مکمل نجی‘‘ منصوبہ قرار دے رہا ہے تاہم اس کی تیاری میں ناسا، پریٹ اینڈ وٹنی، لاک ہیڈ مارٹن، بوئنگ، نارتھروپ گرومین، اسپیس ایکس اور اسکیلڈ کمپوزٹس جیسے اداروں کے ماہرین بھی شریک ہیں جو کسی نہ کسی صورت امریکا میں ہوابازی کے سرکاری شعبے سے وابستہ رہے ہیں۔

ایکس بی ون پروٹوٹائپ دیکھنے میں کسی لڑاکا طیارے ہی کی طرح نظر آتا ہے لیکن اس کا حتمی ڈیزائن خاصا بڑا اور مسافر بردار طیارے جیسا ہی دکھائی دیتا ہے۔

اب تک ایجاد ہونے والے 10 تیز ترین طیارے

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں