The news is by your side.

Advertisement

دنیا کی معمرترین خاتون انتقال کرگئیں

روم: دنیا کی معمر ترین خاتون اوراطالوی شہری ایما مورانو117سال کی عمر میں انتقال کرگئیں۔

تفصیلات کےمطابق دوعالمی جنگیں اور 90 سےزیادہ اطالوی حکومتیں دیکھنےوالی اٹلی کی شہری 117سال کی عمر میں انتقال کرگئیں۔وہ 29نومبر1899کو پیداہوئی تھیں۔

ایمامورانو 19ویں صدی میں پیدا ہونےوالی آخری زندہ شخصیت تھیں۔وہ اپنی لمبی عمبرکی وجہ جنیاتی اورروزانہ تین انڈوں کی خوراک کوبتاتی تھیں۔

ایما اپنے بہن بھائیوں میں سب سے بڑی تھیں۔ان کا انتقال شمالی شہر وربنیا میں ان کےگھرمیں ہوا۔

انہوں نےاپنی اس 117 سالہ زندگی کے دوران شادی،اکلوتےبیٹے کی موت،دوعالمی جنگیں اور 90 سےزیادہ اطالوی حکومتیں دیکھیں۔

ایما اس بات کو تسلیم کرتی تھیں کہ لمبی عمر کی ایک وجہ جنیاتی طور پروراثت میں ملناہے جبکہ ان کی والدہ کابھی91سال کی عمر میں انتقال ہواتھا۔

اطالوی خاتون کےمطابق ان کی طویل عمرکی ایک وجہ 90سال کی عمرتک روزانہ تین انڈے کھاناتھا جن میں سے دو کچے انڈے ہوتے تھے۔

ایما مورانو کے 27سال تک معالج رہنے والے ڈاکٹر کارلو باوا کا کہناہےکہ وہ بمشکل ہی پھل یا سبزیاں کھاتی تھیں۔


دنیا کی معمرترین خاتون117 برس کی ہوگئیں


یاد رہےکہ 4مارچ 2015 کودنیا کی معمرترین خاتون مساؤ اوکاوا نے اپنی 117ویں سالگرہ اپنے اہل خانہ کے ہمراہ منائی تھی،مساؤ 5مارچ 1898 کو اوساکا نامی جاپانی شہر میں پیدا ہوئی تھیں۔


دنیا کے معمرترین فرد انتقال کرگئے


واضح رہےکہ 7جولائی2015 کودنیا کےمعمرترین فرد اورجاپانی شہری ساکارا موموئی 112 سال کی عمرمیں انتقال کرگئےتھے۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں