اندرون سندھ : سود سے تنگ آکر3 ماہ میں41افراد کی خود کشی، قانون سازی کا فیصلہ -
The news is by your side.

Advertisement

اندرون سندھ : سود سے تنگ آکر3 ماہ میں41افراد کی خود کشی، قانون سازی کا فیصلہ

کراچی : صوبائی حکومت نے سندھ میں سود کی لعنت سے تنگ آکر خودکشیوں کے رجحان میں اضافے کا  سختی سے نوٹس لے لیا، بلاول بھٹو نے قانون سازی کی ہدایت کردی۔

تفصیلات کے مطابق صوبہ سندھ میں سود خوری کی لعنت کے باعث خودکشیوں کے انکشافات کے بعد حکومت نے واقعات کا نوٹس لے لیا، سندھ کے مختلف علاقوں میں تین ماہ میں41 افراد نے خودکشیاں کیں،  سود خوروں کی وجہ سے تھر پارکر میں خواتین نے بھی خودکشیاں کیں۔

اس کے علاوہ کشمور اور خیر پور میں بھی خود کشی کے واقعات سامنے آئے، سندھ حکومت نے تھر کے باشندوں کو سود خوروں سے نجات دلانے کا فیصلہ کیا ہے۔

اس حوالے سے سندھ کے مشیر قانون مرتضی وہاب نے بلاول بھٹو سے ملاقات کرکے تھر میں ہونے والی خود کشی کے واقعات سے آگاہ کیا،چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری نے سودی لین دین کی روک تھام کے لیے قانون سازی کی ہدایت جاری کردی،۔

بلاول بھٹو نے متعلقہ محکمے کو سود خوروں کیخلاف سخت قانونی کارروائی کی ہدایت بھی دی، بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ سود پر رقم دینے والے قوم کے مجرم ہیں،  بااثر افراد سود خوری کا کاروبار بند کردیں۔

علاوہ ازیں سندھ کے مشیر قانون مرتضی وہاب کا کہنا ہے کہ سود خوری سے تنگ آکر تھر کے لوگ خودکشیاں کررہے ہیں، غریب ہاریوں کو نجی طور پر قرض دیا جاتا ہے، نجی سود خوری کیخلاف قانون سازی کی جائے گی، سود کھانے والے لوگ ہاریوں کا استحصال کررہے ہیں جن کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں