The news is by your side.

Advertisement

ہوائی جہاز کے موجد رائٹ برادران سائنس دشمن پادری کے بیٹے تھے!

امریکا میں ایک پادری نے اپنے خطبے کے دوران کہا تھا کہ ‘‘لوگو! آج کا انسان سائنس میں ترقی کی آخری حدیں چُھو چکا ہے۔ لہٰذا اب کسی نئی ایجاد کا امکان باقی نہیں رہا۔ اب اگر سائنسی ترقی کے نام پر کچھ خرچ کیا گیا تو وہ سراسر اسراف ہوگا۔’’

کہتے ہیں کہ یہ پادری اکثر درس دیتے ہوئے یہ بات دہراتا کہ خدا نے اڑنے کی صلاحیت پرندوں کے علاوہ محض فرشتوں کو ودیعت فرمائی ہے جو کہ بالکل درست بات ہے۔

پادری کا نام رائٹ تھا۔ دل چسپ بات یہ ہے کہ اسی پادری کے دو بیٹوں نے سائنسی ایجادات میں نام اور مقام حاصل کیا اور حیرت انگیز بات یہ کہ وہ ہوائی جہاز کے موجد شمار کیے جاتے ہیں۔ یہ دونوں رائٹ برادران کے نام سے مشہور ہیں۔

ان دونوں بھائیوں نے ہوائی جہاز کے تجربے کیے تھے۔ بڑا ولبر رائٹ اور چھوٹا آرویل رائٹ کے نام سے جانا جاتا تھا۔ دونوں نے زندگی بھر شادی نہیں کی۔ وہ سائیکلوں کا کاروبار کرتے تھے اور اسی دوران ایجاد و اختراع میں دل چسپی پیدا ہوئی اور انھوں نے ہوا کے دباؤ وغیرہ کے متعلق معلومات حاصل کر کے ایک ہوائی جہاز بنایا جس کی طاقت چار سلنڈر، بارہ ہارس پاور کا انجن تھا۔

17 دسمبر 1903 کو انھوں نے اپنے ہوائی جہاز کے تجربے کے دوران چار پروازیں کیں جن میں سب سے اونچی اڑان 852 فٹ تھی۔ امریکی حکومت نے ان کی حوصلہ افزائی کی فوج میں ہوا بازی کا اسکول کھول کر اس میں آرویل کو استاد مقرر کیا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں