The news is by your side.

Advertisement

نواز شریف کے وارنٹس کی تعمیل پر ہائی کمیشن لندن کے افسران کا تحریری بیان سامنے آگیا

اسلام آباد : سابق وزیر اعظم واز شریف کے وارنٹس کی تعمیل پرہائی کمیشن افسران فرسٹ سیکرٹری دلدارعلی ابڑو اور قونصلر اتاشی راؤعبد الحنان کا تحریری بیان سامنے آگیا۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیراعظم نوازشریف کے وارنٹس گرفتاری کی تعمیل کے معاملے پر پاکستانی ہائی کمیشن لندن سے تحریری بیان سامنے آگیا ، بیان پاکستانی ہائی کمیشن کے لندن کے افسران کی جانب سے دیا گیا ہے۔

فرسٹ سیکرٹری دلدارعلی ابڑو نے بیان میں کہا ہے کہ نوازشریف کے بیٹے کے سیکریٹری وقار احمد نے مجھے کال کرکے کہا کہ وہ نواز شریف کےوارنٹس گرفتاری پارک لین لندن کی رہائش گاہ پر وصول کریں گے۔

دلدارعلی ابڑو کا کہنا تھا کہ ہائی کمیشن نےنواز شریف کے وارنٹس اس پتہ پر تعمیل کرانےکی اجازت دی، وقار سے طے ہوا کہ وہ 23 ستمبر کو دن 11بجے وارنٹس وصول کریں گے۔

فرسٹ سیکرٹری کے مطابق وقار کو بتایا گیا کہ قونصلر اتاشی راؤ عبدالحنان وارنٹس کی تعمیل کے لیے آئیں گے، لیکن پھر وقار نے کال کرکے وارنٹس وصولی سے معذرت کرلی۔

قونصلر اتاشی راؤعبد الحنان نے اپنے بیان میں بتایا کہ لندن میں نوازشریف کی رہائش گاہ پر سترہ ستمبر کو گیا، نوازشریف کے ذاتی ملازم محمدیعقوب نے وارنٹ وصول کرنے سے انکار کردیا، جس کے باعث وارنٹ گرفتاری کی دستی وصولی کی تعمیل نہیں ہوسکی۔

گذشتہ روز وفاقی حکومت کو پاکستانی ہائی کمیشن لندن سے نواز شریف کے وارنٹ گرفتاری کی تعمیل کی اہم دستاویزات موصول ہوئیں تھیں ، دستاویز میں رائل میل کے ذریعے وارنٹس تعمیل کی آن لائن رسیدیں شامل ہیں

یاد رہے اسلام آباد ہائی کورٹ نے العزیزیہ اور ایون فیلڈریفرنسز میں ڈائریکٹر یورپ ون، پاکستانی ہائی کمیشن نمائندے کا ویڈیو لنک بیان ریکارڈ کرنے کا فیصلہ کرتے ہوئے کہا تھا 7 اکتوبر کو ہائی کورٹ کونسلر اتاشی حنان کا بیان بذریعہ ویڈیولنک ریکارڈ کرے گی۔

اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کے حوالے سے سخت ریمارکس دیتے ہوئے کہا تھا نواز شریف حکومت اور عوام کو دھوکہ دے کر لندن روانہ ہوا، نواز شریف لندن بیٹھ کر عوام اور حکومت پر ہنستا ہو گا، انتہائی شرمناک رویہ ہے یہ۔

Comments

یہ بھی پڑھیں