The news is by your side.

Advertisement

ینگ ڈاکٹروں کی ہڑتال تیسرے روز بھی جاری، مریض در در کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور

کراچی : سندھ بھر میں ڈاکٹروں کی ہڑتال تیسرے روز بھی جاری رہی، پریشان حال مریض در در کی ٹھوکریں کھاتے رہے، علاج نہ ملنے پر دادو میں ایک مریضہ دم توڑ گئی۔

تفصیلات کے مطابق کراچی سمیت صوبے بھر کے سرکاری اسپتالوں میں ڈاکٹروں نے اپنے مطالبات کے حق میں تیسرے دن بھی او پی ڈی کابائیکاٹ جاری رکھا۔

ڈاکٹروں نے مریضوں پر اسپتال کے دروازے بند کردیے، حکومت سندھ نے اب تک کوئی نوٹس نہیں لیا۔ مریضوں کا کہنا ہے کہ اسپتال پر تالے لگے ہیں، کوئی ہماری مدد نہیں کرتا۔

دوسری جانب سندھ کے شہر دادو میں ڈاکٹرز کی ہڑتال کے دوران مریضہ دم توڑ گئی۔ ورثا کے احتجاج پر ڈاکٹر نے عملے کے ساتھ مل کر تشدد کیا۔۔۔ مریضہ وزیراں میمن کے لواحقین نےالزام لگایا کہ چار گھنٹے تک ماں تڑپتی رہی مگر ڈاکٹروں نے علاج سے انکار کردیا۔

علاج نہ کرنے پرمریضہ کی جان چلی گئی۔ خاتون کی ہلاکت کے بعد ورثانے ڈاکٹرز کےخلاف احتجاج کیا۔ ورثاکا الزام ہے کہ احتجاج کرنے پر ڈاکٹر نے عملے کےساتھ مل کرتشدد کیا ۔واقعے کے بعد ڈاکٹر اسپتال سے رفو چکرہوگیا، پولیس اسپتال پہنچ گئی۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں