The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد : ینگ ڈاکٹرز سراپا احتجاج، مظاہرین اور پولیس گتھم گتھا، متعدد گرفتار

اسلام آباد : پاکستان میڈیکل کمیشن کے باہر نیشنل لائسنسنگ امتحانات کے خلاف ینگ ڈاکٹرز سراپااحتجاج بن گئے، مظاہرین اور پولیس کے درمیان جنگ چھڑگئی۔

مظاہرین کے عمارت میں داخل ہونے کی کوشش پر پولیس نے لاٹھی چارج کیا اور انہیں منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس کی شیلنگ کی جبکہ مظاہرین کی جانب سے پتھراؤ کیا گیا۔

نیشنل لائسنسنگ امتحان کے خلاف احتجاج جھڑپوں میں تبدیل ہوگیا، طلباء دروازے توڑ اور باڑ پھلانگ کر عمارت میں داخل ہوئے، پولیس نے لاٹھی چارج سے دریغ نہ کیا، ڈاکٹروں نے پتھراؤ کرتے ہوئے اہلکار کو تشدد کا نشانہ بنایا، پتھراؤ سے ایس پی نوشیروان زخمی ہوگئے۔

پولیس اہلکاروں نے پتھراؤ اور تشدد کے جواب میں لاٹھی چارج اور شیلنگ کی جس سے صورتحالک اور کشیدہ ہوگئی بعد ازاں کئی مظاہرین کو حراست میں لے لیا گیا۔

احتجاجی ڈاکٹرز کا کہنا ہے کہ نیشنل لائسنسنگ امتحان کسی صورت قبول نہیں کریں گے، این ایل ای امتحان ہمارے لئے اضافی بوجھ ہے، ایم ڈی کیٹ ٹیسٹ پی ایم سی کے بجائے یو ایچ ایس لے، پی ایم سی کے نائب صدر علی رضا کو عہدے سے ہٹایا جائے۔

واضح رہے کہ پاکستان میڈیکل کمیشن نے تعلیم مکمل ہونے کے بعد رجسٹریشن کے لیے نیشنل لائسنسنگ امتحان کو ملک بھر میں لازمی قرار دیا ہے جبکہ ینگ ڈاکٹرز اسے تسلیم کرنے پر تیار نہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں