site
stats
انٹرٹینمںٹ

پروقار مزاح کے شاعر ضمیر جعفری کی برسی

اردو ادب کے معروف شاعر اور مزاح نگار سید ضمیر جعفری کو اپنے مداحوں سے بچھڑے ہوئے 18 برس بیت گئے۔

ضمیر جعفری کی مزاحیہ شاعری نہایت مہذب اور پروقار ہے جس میں اپنے مزاج کے مطابق انہوں نے پھکڑ پن سے پرہیز کیا ہے۔ ان کا مزاح معاشرے کے مسائل کا عکاس ہے جس میں ان کا اندرونی کرب بھی جھلکتا ہے۔

اردو کے مشہور مصنف شورش کاشمیری نے ایک بار ان کے لیے کہا، ’طبعاً مسلمان ہیں۔ مسکراتے ہوئے الفاظ میں بھر پور طنز کرنے کا جو ڈھنگ اور رنگ انہیں آتا ہے اس سے سارے پاکستان میں شاید ہی کوئی شخص بہرہ مند ہو‘۔

مزاحیہ شاعری کی صنف میں انہیں اکبر الہٰ آبادی کے بعد دوسرا بڑا شاعر مانا جاتا ہے۔

ضمیر جعفری 50 سے زائد تصانیف کے مصنف ہیں۔ ان کی مشہور کتابوں میں مافی الضمیر، مسدس بدحالی، ولایتی زعفران، نشاط تماشا شامل ہیں۔

اپنی زندگی میں وہ اخبارات کے لیے کالم بھی لکھا کرتے تھے جس میں ہلکے پھلکے اور پر مزاح انداز میں زندگی کی تلخ حقیقتوں کی طرف توجہ مبذول کرواتے۔

ضمیر جعفری کی علمی و ادبی خدمات کے اعتراف میں انہیں صدارتی تمغہ برائے حسن کارکردگی، ہمایوں گولڈ میڈل اور تمغہ قائد اعظم سے نوازا گیا۔

ہر عام انسان کی طرح زندگی کی ستم ظریفیوں کا شکار، لیکن مزاج، الفاظ اور چہرے پر شگفتگی سجائے رکھنے والا یہ شاعر سنہ 1999 میں آج ہی کے دن ہم سے بچھڑ گیا۔

ان کی موت پر احمد ندیم قاسمی صاحب نے کہا کہ، ’ضمیر جعفری کو دیکھ کر کچھ اور زندہ رہنے کو جی چاہا کرتا تھا کہ زندگی کا حسن اور محبت کی گہما گہمی اور شگفتگی اس ایک شخص میں مجسم ہو کر رہ گئی تھی۔ ضمیر محبتوں کا کروڑ پتی بھی ہے اور تخلیقی صلاحیتوں کا جنریٹر بھی۔ مجھے یقین ہے کہ وہ سیدھے جنت میں گئے ہوں گے‘۔

سید ضمیر جعفری کے چند مشہور اشعار ملاحظہ کریں۔

درد میں لذت بہت، اشکوں میں رعنائی بہت
اے غم ہستی ہمیں دنیا پسند آئی بہت

شوق سے لختِ جگر نورِ نظر پیدا کرو
ظالمو تھوڑی سی گندم بھی مگر پیدا کرو

بس یہی فرق ہے نالج اور فالج میں
جیسے مرد چوکیدار لڑکیوں کے کالج میں

محسوس کیا دستِ صبا کو نہیں دیکھا
دیکھا بھی خدا کو تو خدا کو نہیں دیکھا

مزید پڑھیں: اردو کے 100 مشہور اشعار


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top