The news is by your side.

Advertisement

ضیا ء الدین اسپتال فلاحی ادارہ نہیں ہے، آڈٹ آفیسر کا عدالت میں انکشاف

کراچی: احتساب عدالت میں ڈاکٹر عاصم کرپشن کیس کی سماعت کے دوران اہم گواہ راحیل شاہنواز کا ڈاکٹر عاصم حسین کے خلاف بیان ریکارڈ کرلیا گیا۔

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں ڈاکٹر عاصم کرپشن کیس کی سماعت کی گئی، دورانِ سماعت ضیاء الدین اسپتال آڈٹ فرم آفیسر اور اہم گواہ راحیل نے عدالت میں جج کے روبرو پیش ہوکر  اسپتال سے متعلق اہم بیان ریکارڈ کروادیا ہے۔

راحیل شاہنواز نے عدالت کو بیان دیا کہ ضیاء الدین اسپتال فلاحی ادارہ نہیں بلکہ تجارتی اسپتال ہے، اسپتال کو ملنے والا فنڈ فلاحی کاموں کے لئے خرچ نہیں کیا گیا۔

دوسری جانب ڈاکٹر عاصم حسین نے صحافیوں سے غیررسمی گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’ گواہ نے جو بھی بولا وہ سچ ہے، نیب جتنا سچ کو دبائے گا اتنا ہی سچ سامنے آئے گا‘‘۔

ڈاکٹر عاصم نے مزید کہا کہ عدالتوں پر مکمل اعتماد ہے اور امید ہے کہ انصاف پر مبنی فیصلے کیے جائیں گے، کیس کی مزید سماعت اکیس مئی تک ملتوی کردی گئی ہے۔

مزید پڑھیں :   ڈاکٹرعاصم حسین پر462 ارب کی کرپشن کے الزام میں فردِ جرم عائد

واضح رہے چھ مئی کو احتساب عدالت میں پراسیکیوٹر کی جانب سے ڈاکٹر عاصم حسین پر دررِ وازارت میں اختیارات کو استعمال کرتے ہوئے گیس اور پیٹرولیم کے ٹھیکے جاری کرنے کے حوالے چونسٹھ ارب روپے کی کرپشن کا الزام عائد کیا گیا تھا۔

فردِجرم میں مزید کہاگیا تھا کہ ڈاکٹرعاصم نے اپنے دورِ وزارت میں مصنوعی گیس کی قلت پیدا کی جس کے باعث کھاد دوسرے ملک سے درآمد کر کے مہنگے داموں فروخت کی گئی، جس سے ملکی خزانے کو چار سو باسٹھ ارب روپے کا خسارہ ہوا۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں