The news is by your side.

Advertisement

درندہ صفت باپ نے کمسن بیٹی کو قتل کرکے اوون میں‌ بھون دیا

کیو : یوکرینی شخص نے اپنی ہی بیٹی کو قتل کرکے اوون میں بھون دیا تاکہ کسی کو بچی کی موت متعلق علم نہ ہوسکے ۔

تفصیلات کے مطابق یوکرین کے پاؤل ماکرچُک نامی شہری اور اس کی اہلیہ نے اپنے تین سالہ بیٹے کو لڑکی کے کپڑے پہنا کر یہ ثابت کرنے کی کوشش کی کہ ان کی بیٹی زندہ ہے تاہم کی پولیس کی آنکھوں میں دھول جھونکنے میں ناکام رہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ باپ اپنی بیٹی کو دھکا دیا تھا جس کے باعث اسے سر میں چوٹ لگی اور وہ ہوس میں نہ آئی جس کے بعد باپ نے اپنے جرم پر پردہ ڈالنے کےلیے اپنی ہی کمسن بیٹی کو اوون میں بھون کر راکھ کردیا۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ پاؤل نامی شخص نے بچی کی باقیات کو دریا میں بہا دیا تاکہ قتل کا کوئی سراغ نہ مل سکے، جب پولیس نے ملزم کے گھر کا دورہ کیا تو میاں بیوی نے اپنے تین سالہ بیٹے کو لڑکی کے کپڑے پہنا کر کھڑا کردیا تاکہ پولیس کو بے وقوف بنایا جاسکے۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ سفاک باپ نے اپنے جرم پر نو ماہ تک پردہ ڈالے رکھا لیکن 50 سالہ ماکرچُک بچی ’ڈارینا‘ کو اوون میں ڈال کر بھوننے کے شک میں گرفتار ہوگیا۔

پولیس نے واقعے کا مقدمہ قتل کی دفعات کے تحت درج کیا اور تحقیقات کا آغا کیا کہ بچی زندہ بھی ہے یا نہیں جبکہ وہ مبینہ طور پر ٹکڑے ٹکڑے کرکے جلادی گئی تھی۔

پولیس ماکرچُک کی 41 سالہ اہلیہ کو بھی قتل میں آلہ کار بننے پر گرفتار کرلیا۔

رپورٹس کے مطابق پولیس کا کہنا تھا کہ اگر ماکرچُک پر پانچ سالہ بیٹی کے قتل اور لاش کو نذر آتش کرنے کا الزام ثابت ہوگیا تو اسے 15 سال قید کی سزا کا سامنا کرنا پڑے گا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں