The news is by your side.

Advertisement

ایران،عراق کے سرحدی علاقے میں تباہ کن زلزلہ، ہلاکتوں کی تعداد339 ہوگئی

ستہران : ایران اور عراق کے سرحدی علاقوں میں سات اعشاریہ چار شدت کے زلزلے نے تباہی مچادی، زلزلے سے ہلاکتوں کی تعداد 339 ہوگئی جبکہ ڈیڑھ ہزارسے زائد افرادزخمی ہوئے، حکام نے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہرکیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق سات اعشاریہ چار شدت کے زلزلے سے ایران اورعراق کے سرحدی علاقہ میں ہولناک تباہی کا منظر پیش کر ریا ہے، پلک جھپکتے میں عمارتیں اورگھرملبے کا ڈھیربن گئے، سڑکیں،پل، بجلی اورمواصلات کا نظام تباہ ہوگیا۔

خوف زدہ شہریوں نے رات سڑکوں پرگزاری جبکہ آفٹرشاکس اوربجلی کی عدم فراہمی کے باعث امدادی کارروائیوں میں مشکلات کا سامنا ہے، اسپتال زخمیوں سے بھر گئے۔

ایران اور عراق میں شدید زلزلے کے باعث ہلاکتوں میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے اور ہلاکتوں کی تعداد 339 تک کا پہنچی، ایران میں328 اور عراق میں11افراد ہلاک ہوئے جبکہ ڈیڑھ ہزارسے زائد افرادزخمی ہوئے، حکام نے ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ظاہرکیا ہے۔

امریکی زلزلہ پیما مرکز پر زلزلے کی شدت سات اعشاریہ تین ریکارڈ کی گئی،جس کی گہرائی حلب جاہ کےقریب تینتیس کلومیٹرتھی جبکہ  زلزلے کا مرکز ایران کے سرحد کے قریب عراق کا شہر حلبجہ تھا۔

زلزلہ اس قدر شدید نوعیت کا تھا کہ اسے عراق کے دارالحکومت بغداد میں بھی محسوس کیا گیا۔

زلزلے کے جھٹکے شام، کویت، بحرین، قطر، سعودی عرب ،اردن، لبنان اسرائیل اور ترکی میں بھی محسوس کیے گئے۔

واضح رہے کہ اس سے قبل  ایران میں متعدد مرتبہ زلزلے آئے، 2003 میں ایران میں خوفناک زلزلے سے 31 ہزار افراد جبکہ 2005 میں 600 افراد اور2012   میں 300 افراد ہلاک ہوئے تھے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں