The news is by your side.

Advertisement

اسرائیلی وزیراعظم کوسزا سے بچانے کیلئے پارلیمنٹ متحرک

یروشلم : اسرائیلی وزیراعظم نتن یاہو کو بدعنوانی کےالزامات سے بچانے کیلئے پارلیمنٹ متحرک ہوگئی۔

تفصیلات کے مطابق اسرائیلی وزیراعظم نتن یاہو کو بدعنوانی کےالزامات سےبچانے کیلئے حکمراں جماعت کے اراکین نے پارلیمنٹ میں بل پیش کیا ہے، جس کے تحت تفتیشی عمل کے حوالے سے قوانین میں دو نئی شقیں شامل کی گئی ہیں۔

بل کے حق میں 46جبکہ مخالفت میں 36ووٹ آئے، بل پر ابھی مزید دو بار ووٹنگ ہونا ہے جس کے بعد ہی یہ بل قانونی شکل اختیار کرسکتا ہے۔

پہلی شق کے مطابق تحقیقاتی کمیشن اٹارنی جنرل پولیس سے اب تک ہونے والی تفتیش کے نتائج معلوم کرسکتا ہے لیکن اسے ظاہر نہ کرنے کا پابند ہوگا۔

دوسری شق کے مطابق خلاف ورزی کی صورت میں اسے جیل کی ہوا کھانا پڑسکتی ہے۔

اپوزیشن نے الزام عائد کیا ہے کہ اس نئے قانون کا مقصد وزیر اعظم نیتن یاہو کو کرپشن کے الزامات کے تحت جاری تفتیش سے بچانا ہے۔

اپوزیشن کہنا ہے اس طرح کی شقیں پیش کرنے مقصد نتن یاہو کو سزا سے بچانا ہے۔


مزید پڑھیں : دھوکا دہی کے سنگین الزامات، اسرائیلی وزیر اعظم نیتن یاہو کے خلاف تحقیقات کا حکم


خیال رہے کہ اسرائیلی وزیراعظم پر کاروباری شخصیات سےبڑے پیمانے پر تحائف وصول کرنے کے الزامات ہیں۔

یاد رہےکہ نیتن یاہو کے حوالے سے حالیہ مہینوں میں سامنے آنے والے سکینڈلز پر ان کے مخالفین نے تحقیقات کا مطالبہ کیا تھا تاہم ان میں سے ایک پر بھی مقدمہ نہ چل سکا۔

اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو کی اہلیہ سارہ نیتن یاہو کے خلاف سرکاری خزانے میں خورد برد کے الزام میں پولیس کی تفتیش جاری ہے۔

واضح رہےکہ اسرائیلی وزیراعظم پر1لاکھ 27 ہزار ڈالرزبرطانیہ کے ایک دورے کے دوران حسب ضرورت ذاتی بیڈ روم پرخرچ کرنے کا الزام ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں