The news is by your side.

Advertisement

اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی کا آغاز، ضامن کو ملزم پیش کرنے کا آخری موقع

اسلام آباد : کرپشن ریفرنس میں مسلسل غیرحاضری پر اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی کا آغاز ہوگیا ، احتساب عدالت کے نوٹس بورڈ پر طلبی کا اشتہار لگ گیا، عدالت نے کہا ہے کہ مفرورملزم دس روز میں پیش نہ ہوا تو اسے اشتہاری قرار دے دیا جائے گا۔

تفصیلات کے مطابق فصیلات کے مطابق وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے خلاف آمدن سے زائد اثاثے بنانے کے ریفرنس کی سماعت احتساب عدالت کے جج محمد بشیر کر رہے ہیں، اسحاق ڈاراحتساب عدالت میں پیش نہ ہوسکے۔

سماعت میں مسلسل غیرحاضری پر اسحاق ڈار کو اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کردی گئی ، ملزم اسحاق ڈار کی طلبی کا اشتہار احتساب عدالت کے نوٹس بورڈ پر چسپاں کردیا گیا۔

نوٹس میں ملزم اسحاق ڈارکو دس روزمیں احتساب عدالت میں پیش ہونے کاحکم دیا گیا ہے۔

عدالت نے وارننگ دی ہے کہ دس روزمیں پیش نہ ہونے کی صورت میں اسحاق ڈارکواشتہاری قراردیا جائیگا، نوٹس اکیس نومبر کو جاری کیا گیا۔


مزید پڑھیں : اسحاق ڈار مفرور ملزم قرار، اشتہاری قراردینے کی کارروائی شروع کرنےکاحکم


دوسری جانب طلبی کے نوٹس کے باوجود اسحاق ڈار کے ضامن احمدعلی قدوسی غیرحاضر رہے ، احتساب عدالت کے باہر ضامن کی طلبی کی آوازیں لگائی گئیں ، ضامن کو پیش ہونے کے لیے آخری موقع دیتے ہوئے سماعت میں وقفہ دیا گیا ہے۔

اسحاق ڈار کے ضامن کو ملزم پیش کرنے کا آخری موقع دیدیا

سماعت میں وقفے کے بعد اثاثہ جات ریفرنس کیس میں اسحاق ڈار کےضامن احمد علی احتساب عدالت میں پیش ہوئے، ضامن احمد علی نے عدالت سے استدعا کی اسحاق ڈارکی انجیو گرافی ہوچکی ہے، رپورٹس کاانتظار ہے، اسحاق ڈارکی وطن واپسی کیلئے تین سے چار ہفتے درکارہیں ، وقت دیا جائے۔

احمد علی عدالت کو بتایا کہ اسحاق ڈارکا پتہ کرنے خود بھی برطانیہ جا رہے ہیں۔

جس پر نیب وکیل نے درخواست کی کہ عدالت نےضامن کوملزم پیش کرنے کیلئے مناسب وقت دیا، ملزم کی مسلسل عدم حاضری پرزرضمانت ضبط کی جائیں۔

عدالت نے دلائل سننے کے بعد اسحاق ڈارکے ضامن کوملزم پیش کرنے کا آخری موقع دیتے ہوئے سماعت چاردسمبر تک کے لئے
ملتوی کردی۔

یاد رہے کہ گذشتہ سماعت میں اثاثہ جات ریفرنس کیس میں اسحاق ڈار کو مفرور ملزم قرار دیتے ہوئے ان کیخلاف اشتہاری قرار دینے کی کارروائی شروع کرنےکاحکم دیا تھا ،جبکہ اسحاق ڈار کے نمائندے مقرر کرنے کی درخواست خارج کردیا تھا۔

اسحاق ڈار کے ضامن کو شوکاز نوٹس بھی جاری کئے گئے تھے۔


مزید پڑھیں : عدم حاضری پر اسحٰق ڈار کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری


احتساب عدالت نے گزشتہ سماعت پر وزیرخزانہ کے ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کئے تھے۔

ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتاری جاری کئے جانے کے بعد چیئرمین نیب نے وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار کا نام ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں ڈالنے کی منظوری دی تھی، جس کے بعد وزارتِ داخلہ کو خط لکھ دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ آمدن سےزائد اثاثہ جات ریفرنس میں احتساب عدالت کی جانب سے اسحاق ڈار پر فرد جرم عائد کی جاچکی ہے تاہم اسحٰق ڈار نے صحت جرم سے انکار کردیا تھا۔


مزید پڑھیں : وزیرخزانہ اسحاق ڈار پرفرد جرم عائد


واضح رہے کہ سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ڈپٹی پراسیکیوٹرجنرل نیب کی سربراہی میں نیب پراسیکیوشن ونگ نے سابق وزیراعظم نوازشریف اور ان کے بچوں ، داماد اور اسحاق ڈار کے خلاف احتساب عدالت میں ریفرنسزدائرکیے تھے۔قومی احتساب بیورو کی ٹیم نے شریف خاندان کے خلاف 3 اور وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف 1 ریفرنس دائر کیا تھا۔

وزیرخزانہ اسحاق ڈار کے خلاف سیکشن 14 سی لگائی گئی ہے ‘جو آمدن سے زائد اثاثے رکھنے سے متعلق ہے۔ نیب کی دفعہ 14 سی کی سزا 14 سال مقرر ہے۔


اگر آپ کو یہ خبر پسند نہیں آئی تو برائے مہربانی نیچے کمنٹس میں اپنی رائے کا اظہار کریں اور اگر آپ کو یہ مضمون پسند آیا ہے تو اسے اپنی فیس بک وال پر شیئر کریں۔

Print Friendly, PDF & Email

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں