اسلام آباد میں افغان بستی مسمار کرنے کے لئے سی ڈی اے کا آپریشن، مکین مشتعل -
The news is by your side.

Advertisement

اسلام آباد میں افغان بستی مسمار کرنے کے لئے سی ڈی اے کا آپریشن، مکین مشتعل

اسلام آباد:ہائی کورٹ کے حکم پر اسلام آباد میں واقع غیر قانونی افغان بستی کو مسمار کرنے کے دوران مکین مشتعل ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائی کورٹ نے سیکٹر آئی 11 میں واقع افغان بستی کو مسمار کرنے کا حکم دیا تھا۔

AFGHAN BASTI

سی ڈی اے حکام پولیس اور رینجرز کے ہمراہ عدالتی احکامات پر عمل درآمد کے لئے پہنچے تو پہلے پہل تو مکین رضاکارانہ طور پر مکان خالی کرنے پرتیارہوگئے لیکن جیسے ہی کاروائی شروع کی گئی تو مکینوں نے مشتعل ہوکر عملے پر پتھراوٗ شروع کردیا۔

AFGHAN BASTI

اس موقع پر ڈی سی اسلام آباد کا کہنا تھا کہ افغان بچی میں 800 سے زائد مکان غیر قانونی ہیں اورمکینوں کو دوبارنوٹس دئیے جاچکے ہیں جن کی معیاد ختم ہوچکی ہے۔

AFGHAN BASTI

سی ڈی ائے کا موقف ہے کہ اس موقع پرکسی کو بھی ہتھیاروں کے استعمال کی اجازت نہیں ہوگی۔

واضح رہے کہ افغان بستی جرائم کی آماج گاہ کے نام سے مشہورہے اور کئی بدنامِ زمانہ دہشت گرد بھی یہاں سے ماضی میں گرفتارہوچکے ہیں۔

AFGHAN BASTI

افغان بستی کی ساکنان خواتین اوربچوں کی جانب سے احتجاج کا سلسلہ جاری ہے اور خواتین گھروں کی چھتوں پر چڑھ کر اپنے مکانات مسمار نہ کرنے کے اعلانات کررہے ہیں۔

اس موقع پر پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری موجود ہے اور خواتین پولیس افسران کی بڑی تعداد بھی موجود ہے جبکہ واٹر کینن بھی طلب کرلئے گئے ہیں۔

پولیس کی جانب سے مکینوں کو بزورِ قوت ان کے گھروں سے نکالا جارہا ہے تاکہ جلد از جلد یہ آپریشن مکمل کرلیا جائے۔

AFGHAN BASTI

سی ڈی اے کے ترجمان رمضان ساجد نے اے آر وائی نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم یہاں کے مکینوں کو پر امن طریقے سے نکالنا چاہتے ہیں۔

ان کا کہنا تھا کہ نوٹس بھی دئیے جاچکے ہیں اورمساجد سے بھی اعلان کیا جاتا رہا ہے کہ مکین رضاکارانہ طور پر مکان خالی کئے جائیں۔

ایک سوال کے جواب میں رمضان خالد کا کہنا تھا کہ مزید وقت نہیں دیا جاسکتا یہ افراد 1985 سے یہاں قابض ہیں اور کوئی مرتبہ یہ جگہ خالی کرانے کی کوشش کی جاچکی ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں