ایف آئی اے نے قبضے میں لی گئی ہزاروں فائلوں کی جانچ پڑتال شروع کردی -
The news is by your side.

Advertisement

ایف آئی اے نے قبضے میں لی گئی ہزاروں فائلوں کی جانچ پڑتال شروع کردی

کراچی : ایف آئی اے نے سوک سینٹر کے دسویں فلور پر واقع لینڈ ڈپارٹمنٹ سے قبضے میں لی گئی ہزاروں فائلوں کی جانچ پڑتال شروع کردی۔

زرائع کے مطابق سوک سینٹر سے ملنے والے زمینوں کے ریکارڈ میں بڑے پیمانے پر گھپلے سامنے آئے ہیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ کراچی میں اربوں روپے کی زمین پر قبضے کیے گئے ،زمینوں پر قبضے کی اربوں روپے کی رقم سے محکمہ لینڈ کے افسران سمیت دیگر لوگ کروڑ پتی بن گئے۔

زرائع کا دعوی ہے کہ زمینوں پر قبضے سے حاصل کی گئی رقم شہر میں امن وامان خراب کرنے میں بھی استعمال ہوتی رہی ہے۔

یاد رہے کہ رینجرز اور وفاقی تحقیقاتی ادارے ایف آئی اے نے سوک سینٹر میں محکمہ لینڈ کے دفتر پر چھاپہ مارکر ہزاروں کی تعداد میں چائنہ کٹنگ اور غیر قانونی طریقوں سے لیز کی جانے والی زمینوں کا ریکارڈ تحویل میں لے لیا تھا۔

ذرائع کے مطابق یہ چھاپہ زمینوں کی غیرقانونی الاٹمنٹ کے حوالے سے مارا گیا۔ رینجرز اور ایف آئی اے نے سوک سینٹر میں تیسرے اور دسویں فلور پر واقع محکمہ لینڈ کے دفتر پر پہلے سے گرفتار محکمہ لینڈ کے افسرجمیل بلوچ کی نشاندہی پر چھاپہ مارا تھا۔

ذرائع نے انکشاف کیا کہ وفاقی حکومت کے اداروں سے تعلق رکھنے والی 700 سے 800 ایکڑ زمین قابل اعتراض طریقے سے نجی افراد کو دی گئیں۔

چھاپے کے دوران رینجرز نے ہزاروں کی تعداد میں زمینوں کی فائلیں تحویل میں لے لیں ، ذرائع کاکہنا ہے کہ رینجرز نے ذیادہ تر فائلیں چائنہ کٹنگ اور غیر قانونی طریقے سے زمینوں کو لیز کئے جانے کی فائلیں تحویل میں لیکر ٹرک کے ذریعے نامعلوم مقام پر منتقل کردی ہیں، کارروائی کے دوران سادہ لباس ایف آئی اے کے افسران و اہلکار بھی رینجرز کے ہمراہ تھے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں