The news is by your side.

Advertisement

دھاندلی کا الزام : علی امین گنڈا پورنے گرفتاری دینے سے انکار کردیا

پشاور / ڈیرہ اسماعیل خان : تحریک انصاف کے رہنما علی امین گنڈا پور نے اس خدشے کا اظہار کیا ہے کہ ان کی گرفتاری کے بعد کارکن اشتعال میں آجائیں گے۔

ان خیالات کا اظہار انہوں نے اے آر وائی کے پروگرام آف دی ریکارڈ میں گفتگو کرتے ہوئے کیا، ان کا کہنا تھا کہ مجھے ضمانت قبل از گرفتاری کا حق حاصل ہے اور گرفتاری نہ دینے کا قانونی حق ہے، گرفتاری کیوں دوں ؟

علی امین گنڈا پور کا کہنا تھا کہ اگر مجھے گرفتار کیا گیا تو حالات کی ذمہ دار انتظامیہ ہوگی، علاوہ ازیں پولیس نے خیبر پختونخوا کے وزیر خزانہ علی امین گنڈا پورکی گرفتاری کیلئے ان کے گھر کا محاصرہ کرلیا ہے۔

اس موقع پر پاکستان تحریک انصاف کے کارکنان کی بڑی تعداد بھی ان کی رہائش گاہ پر پہنچ گئی، کارکنان نے پولیس کیخلاف شدید نعرے بازی کی اور خیبر پختونخوا کے وزیر اعلیٰ پرویز خٹک کیخلاف بھی نعرے لگائے۔

  واضح رہے کہ علی امین گنڈا پور پر گزشتہ روز بیلٹ باکس ساتھ لے جانے کا الزام ہے، بلدیاتی انتخابات کے موقع پر صوبائی وزیر علی امین گندا پور کے بھائی عمر امین نے ڈسٹرکٹ کونسل کی نشست پر بلدیاتی انتخابت میں حصہ لیا تھا۔

علی امین گنڈا پور اپنے محافظوں کے ہمراہ  یو سی ہمت کے پولنگ اسٹیشن میں گھس گئے اور بیلٹ باکسز ساتھ لے جانے کی کوشش کی، انتخابی عملے نے مزاحمت کی تو اس پر بھی ٹوٹ پڑے اور تشدد کا نشانہ بنا ڈالا۔

علی امین گنڈا پور اپنی گاڑی میں بیلٹ باکس لے جارہے تھے کہ مقامی افراد نے گاڑی کا گھیراؤ کیا، جس کے بعد علی امین گنڈاپور کے محافظوں نے مقامی افراد پر فائرنگ کی، جس کے نتیجے میں ایک خاتون زخمی ہوگئی۔

بعد ازاں پولیس نے ان کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔

Comments

یہ بھی پڑھیں