The news is by your side.

Advertisement

شیعہ ملیشیا ’داعش‘ سے رمادی واپس چھیننے کے لئے تیار

بغداد: عراقی شہر رمادی کو داعش کے تسلط سے چھڑانے کے لئے ہزاروں جنگجوؤں پرمشتمل شیعہ ملیشیا گروہ نے داعش کو فیصلہ کن ضرب لگانے کی تیاری مکمل کرلی۔

ذرائع کے مطابق 3000 کے لگ بھگ جنگجوؤں پر مشتمل ملیشیا نے رمادی کے قریب ایک ملٹری بیس پر اپنی صفیں درست کرلی ہیں اور وہ کسی بھی وقت داعش کا سامن کرنے کے لئے تیار ہیں۔

عراقی وزیراعظم حیدر العبادی کی جانب سے سنی اکثریتی علاقے کو داعش کے تسلط سے چھڑانے کے لئے شیعہ ملیشیاؤں کو بھیجنا فرقہ ورانہ تعصب کو ہوا دے سکتا ہے۔

امریکی وزیرخارجہ جان کیری کا کہنا ہے کہ رمادی کو داعش سے واپس لینا چند دنوں کا معاملہ ہے حکمت عملی میں تبدیلی نہیں کی جائے گی۔

واضح رہے کہ شہرپرداعش کے حملے کے دوران 500 سے شائد افراد جاں بحق ہوئے تھے جبکہ اکثریت شہر چھوڑ کر نقل مکانی کرگئی۔

انبرصوبے کے کاؤنسل صباح کرہوت کا کہنا ہے کہ شیعہ ملیشیا اس وقت ہبانیہ نامی ملٹری بیس میں فوری ایکشن کے لئے تیار ہے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں