site
stats
پاکستان

طوفانی بارشوں سے’موہن جو داڑو‘کی حالت مخدوش

موہن جو داڑو:وادیٔ سندھ کے قدیم ترین آثارِ قدیمہ موہن جوداڑوں کو بارشوں کے سبب شدید خطرات لاحق ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق طوفانی بارشوں نے جہاں سندھ بھر کو نقصان پہنچایا ہے وہیں وادیٔ مہران کی 5000 سال قدیم تہذیب کے آثار موہن جو داڑو میں بھی برسات کا پانی داخل ہوگیا ہے۔

ذرائع کے مطابق کھنڈرات کے کئی حصے بارشوں میں بہہ گئے ہیں اور باقی ماندہ کو بھی شدید خطرات لاحق ہیں۔

واضح رہے کہ موہن جو داڑو اس خطےکی تہذیب کا امین قومی ثقافتی ورثہ ہے جس کی حفاظت کی ذمہ داری 18 ویں ترمیم کے بعد حکومتِ سندھ پرعائد ہوتی ہے۔

مقامی افراد کے مطابق حکومت کی جانب سے بے توجہی اورغفلت کے سبب یہ قدیم آثار انتہائی تیزی سے برباد ہورہے ہیں۔

دوسری جانب حکومت کی ترجمانی کرتے ہوئے شرمیلا فاروقی نے ٹویٹ میں اس خبر کی تردید کرتے ہوئے کہا ہے کہ چھ مشینوں اور 73 افراد پر مشتمل عملے کی مدد سے موہن جو داڑو سے پانی نکالا جارہا ہے اور اس کی حفاظت کے ہر ممکن انتظامات کئے جارہے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top