site
stats
پاکستان

پشاور: اے آروائی نیوزکے رپورٹر فیض اللہ خان آج پاکستان آئیں گے

پشاور: گورنرخیبرپختونخوا سردار مہتاب احمد خان عباسی نے اےآروائی نیوزکے رپورٹرفیض اللہ کے سرکاری استقبال کے احکامات جاری کر دیئے ہیں۔

اے آر وائی نیوز کے رپورٹر فیض اللہ افغان جیل سے رہائی کے بعد آج وطن واپس پہنچ رہے ہیں، گورنرخیبرپختونخوا سردار مہتاب احمد خان عباسی کےحکم پر آج فیض اللہ کو طور خم سرحد پر سرکاری پروٹوکول دیا جائے گا۔

پولیٹیکل ایجنٹ خیبرایجنسی شہاب الدین حکومتِ پاکستان کی جانب سے فیض اللہ کا سرکاری استقبال کریں گے۔ ٹرائبل یونین آف جرنلسٹس طورخم سرحد پر فیض اللہ کواستقبالیہ دیں گے، افغان حکام نے اے آر وائی نیوز کے رپورٹر فیض اللہ کو افغان جیل سے رہا کر کے جلال آباد میں پاکستان کے قونصل جنرل فرمان اللہ یوسف زئی کےحوالے کر دیا ہے۔

فیض اللہ رہائی ملنے پر بہت خوش ہیں۔ ان کا کہنا ہے کہ وہ رہائی کی کوششوں پر تمام دوستوں کے شکر گزار ہیں، فیض اللہ نے اےآروائی انتظامیہ بالخصوص اے آروائی کے صدر اور سی ای او سلمان اقبال کیلئے نیاز مندی اور شکریہ کا اظہار کیا ہے۔

اےآروائی کے صدر اور سی ای اوسلمان اقبال نے فیض اللہ کی رہائی پرخوشی کا اظہارکرتے ہوئے وزارتِ خارجہ، افغان حکومت ، صحافتی برادری کا شکریہ ادا کیا ہے، اے آروائی کے صدراور سی ای او سلمان اقبال نے فیض اللہ کی رہائی کی کوششوں پر پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری اور سینیٹر رحمان ملک کا بھی شکریہ ادا کیا۔

رحمان ملک نے افغان وزیرداخلہ اور افغان سفیر سے بھی رابطہ رکھا اور خط بھی بھیجا۔ سینیٹرطلحہ محمود نے بھی فیض اللہ کی رہائی کیلئے کوششیں کیں، پاکستان میں صحافی برادری نے فیض اللہ کی رہائی کیلئےملک گیر احتجاج کیا، فیض اللہ کو پیشہ وارانہ فرائض کی انجام دہی کے دوران اپریل میں غلطی سے افغان حدود میں داخل ہونے پر حراست میں لیا گیا تھا اورافغان عدالت نے انہیں چار سال قید کی سزا سنائی تھی۔

پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹرطاہرالقادری نے فیض اللہ کی رہائی پر اے آر وائی کو مبارک باد دی ہے، ڈاکٹر طاہر القادری کا کہنا ہے کہ فیض اللہ کی ملک و قوم کیلئےقربانیاں قابل تحسین ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
20

Comments

comments

اس ویب سائیٹ پر موجود تمام تحریری مواد کے جملہ حقوق@2018 اے آروائی نیوز کے نام محفوظ ہیں

To Top