The news is by your side.

Advertisement

ڈاکٹر مرسی کی سزائے موت جمہوریت کا قتل ہے، جماعت اسلامی

لاہور : جماعت اسلامی نے ڈاکٹر مرسی اوراخوان المسلمون کے رہنماؤں کو سزائے موت کی مذمت کرتے ہوئے عالمی اداروں سے مسلمان ممالک میں جمہوری عمل کے خاتمے کی ہر کوشش کو ناکام بنانے میں اپنا کردار ادا کرنے کی اپیل کی ہے ۔

جماعت اسلامی پاکستان کی مرکزی قیادت کا اجلاس مرکزی سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ کی صدارت میں منعقد ہوا جس میں قرار دیا گیا کہ پاکستانی قوم جمہوریہ مصر کی نام نہاد عدالت کی طرف سے مصر کے پہلے منتخب صدر ڈاکٹر محمد مرسی اور ان کے 106 ساتھیوں کو سزائے موت سنانے کی پر زور مذمت کرتی ہے۔

قرارداد میںسزا کو انسانی حقوق کی خلاف ورزی اور جمہوریت کا قتل قرار دیاگیاہے ۔جماعت اسلامی کی قیادت نے واضح کیا کہ ڈاکٹر محمد مرسی باقاعدہ پہلے براہ راست عوامی انتخابات کے ذریعے مصر کے منتخب صدر ہیں جبکہ ریفرنڈم میں 8 مرتبہ اپنی برتری ثابت کی ہے لیکن ایک عالمی سامراجی سازش اور غیر جمہوری شب خون کے ذریعے ان کی جائز قانونی حکومت ختم کی گئی۔

انہیں نام نہاد مقدمے میں نا م نہاد عدالت کی طرف سے سزائے موت عدل و انصاف کے مروجہ عالمی اور انسانی حقوق کی دھجیاں بکھیرنے کے برابر ہے ۔

جس کے ذریعے عرب بہار کو خزاں میں تبدیل کیا گیاہے جو جمہوری ملکوں کے لیے ایک کھلا چیلنج ہے ۔جماعت اسلامی کی مرکزی قیادت نے اقوام متحدہ سمیت انسانی حقوق کے عالمی اداروں سے اپیل کی ہ وہ مسلمان ممالک میں جمہوری عمل کے خاتمے کی ہر کوشش کو ناکام بنانے میں اپنا کردار ادا کریں اور مصر کے مطلق العنان حکمران کو غیر جمہوری ، غیر قانونی اور غیر انسانی اقدامات سے باز رکھنے کے لیے اپنا کردار ادا کریں ۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں