The news is by your side.

Advertisement

عالمی ادارہ صحت نے کورونا مریضوں کو کون سی دوا دینے کی سفارش کی؟

جنیوا : کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال میں اب تک مریضوں کیلئے حتمی طور پر کوئی مخصوص دوا تاحال تجویا نہیں کی گئی ہے لیکن عالمی ادارہ صحت نے کورونا مریضوں کو ایک خاص دوا دینے کی سفارش کی ہے۔

عالمی ادارہ صحت نے سفارش کی ہے کہ کورونا وائرس کے شدید بیمار مریضوں کو دیگر دواؤں کے ساتھ گٹھیا کے علاج کی دوائیں بھی دی جائیں۔

عالمی ادارے نے گزشتہ روز برٹش یونیورسٹی کے محققین اور دیگر کے ساتھ کورونا وائرس کے تقریباً 10 ہزار مریضوں پر طبی آزمائش کی رپورٹ جاری کی ہے۔

رپورٹ کے مطابق سنگین نوعیت والے مریضوں کو ڈیکسامیتھاسون وغیرہ جیسے اسٹیروئیڈز کے ساتھ گٹھیا کی کوئی دوا مثلاً ایکٹی مرا یا ٹوسیلی زُوماب یا پھر اس سے ملتے جلتے اثرات کی حامل ساری لُماب وغیرہ دینے سے ان مریضوں میں موت کے امکانات سادہ علاج کے مقابلے میں کم ہوگئے۔

عالمی ادارہ صحت پہلے کہہ چکا ہے کہ سنگین نوعیت والے مریضوں کے لیے اسٹیروئیڈز کارآمد ہیں۔ طبی آزمائش کے بعد ادارے نے مریضوں کے علاج کی گائیڈ لائنز میں گٹھیا کے علاج کی دوائیں بھی شامل کرنے کا کہا ہے۔

ایکٹیمرا نامی دوا جاپان میں اوساکا یونیورسٹی کے ایک خصوصی تقرر کردہ پروفیسر کِشی موتو تادامِتسُو کی زیر قیادت ٹیم اور دوا ساز کمپنی چُوگائی نےتیار کی تھی۔ یہ دوا مدافعتی نظام کے ضرورت سے زیادہ فعال ہوجانے کے باعث ہونے والی سوجن کو کم کرنے کے لیے تیار کی گئی تھی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں