The news is by your side.

کینیڈا کے 13 مقامات پر چاقو کے وار سے 10 افراد ہلاک

سسکیچوان : کینیڈا میں تیرہ مقامات پر چاقو زنی کے واقعات کے نتیجے میں دس افراد ہلاک اور پندرہ زخمی ہوگئے۔

تفصیلات کے مطابق کینیڈا کے صوبے سسکیچوان صوبے میں تیرہ مقامات پر چاقو زنی کے واقعات رپورٹ ہوئے ، چاقو سے حملوں کے نتیجے میں دس افراد ہلاک اور پندرہ زخمی ہوگئے۔

کینیڈا پولیس نے بتایا کہ دو مشتبہ حملہ آوروں کی تلاش کیلئے سرچ آپریشن جاری ہے۔

رائل کینیڈین ماونٹیڈ پولیس کے اسسٹنٹ کمشنر رہونڈا بلیک مور نے ایک پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ چاقو کے حملے جیمز سمتھ کری نیشن اور ساسکاٹون کے شمال مشرق میں واقع ویلڈن گاؤں کے متعدد مقامات پر ہوئے۔

انہوں نے مزید کہا کہ،”متعدد دیگر افراد کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہے ، جن میں کم از کم 15 کو مختلف اسپتالوں میں منتقل کردیا گیا ہے۔

اسسٹنٹ کمشنر کا کہنا تھا کہ حملہ آروں کی شناخت ڈیمین اور مائلس سینڈرسن کے نام سے ہوئی ہے اور ان کی عمریں 30- اور 31 سالہ بتائی جارہی ہے۔

بلیک مور نے بتایا کہ کہ پورے علاقے میں شاہراہوں اور سڑکوں پر متعدد چیک پوائنٹ قائم کردیے گئے ہیں اور مشتبہ افراد کی تلاش کے لیے ”زیادہ سے زیادہ” پولیس اہلکار تعینات کیے گئے ہیں

ویلڈن کی رہائشی ڈیان شیر نے مقامی میڈیا کو بتایا کہ اس کا پڑوسی ایک شخص جو اپنے پوتے کے ساتھ رہتا تھا، مارا گیا ہے۔ "میں بہت پریشان ہوں کیونکہ میں نے ایک اچھے پڑوسی کو کھو دیا۔”

جیمز اسمتھ کری نیشن دراصل ایک قدیم کمیونٹی ہے، جس کے تقریباً 3400 افراد بنیادی طورپر زراعت، شکار اور ماہی گیری کا کام کرتے ہیں۔ ویلڈن ایک گاوں ہے جس کی آبادی تقریباً 200 افراد پر مشتمل ہے۔

کینیڈا کے وزیر اعظم جسٹن ٹروڈو نے چاقو زنی کے اس بڑے پیمانے پر حملے کو "خوفناک اور دل دہلا دینے والا” قرار دیتے ہوئے کہا "میں ان لوگوں کے بارے میں سوچ رہا ہوں جنہوں نے اپنے پیاروں کو کھو دیا اور ان لوگوں کے بارے میں جو زخمی ہوئے ہیں۔”

جیمز اسمتھ کری نیشن جس کی آبادی 2500 ہے، نے مقامی ہنگامی حالت کا اعلان کیا، جب کہ صوبہ ساسکیچیوان کے بہت سے باشندوں کو جگہ جگہ پناہ دینے کی اپیل کی گئی۔

Comments

یہ بھی پڑھیں