برطانیہ: 100 سالہ خاتون کا 74 سالہ شخص سے شادی کا فیصلہ norah-witkiss
The news is by your side.

Advertisement

برطانیہ: 100 سالہ خاتون کا 74 سالہ شخص سے شادی کا فیصلہ

لندن : برطانیہ کی رہائشی 100 سالہ بزرگ خاتون نے 74 برس کے شخص کی شادی کی پیش کش قبول کرتے ہوئے کہا ہے کہ مجھے اس فیصلے پر بے حد خوشی ہے۔

تفصیلات کے مطابق برطانیہ کے دو بزرگ شہریوں نے 100 برس کی عمر میں شادی کرنے کا اعلان کیا گیا ہے، بزرگ شہری کی جانب سے عمر کے اس عرصے میں شادی کے اعلان نے سب کو حیرت زدہ کردیا ہے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کا کہنا تھا کہ گذشتہ 30 برس سے ساتھ زندگی گزارنے والی 100 سالہ نورا وٹکس اپنے مستقبل کے شریک حیات 74 سالہ یٹس میلکم کے ساتھ شادی کے فیصلے پر بے حد خوش ہیں۔

مقامی میڈیا کی جانب سے نورا وٹکس سے تاخیر سے شادی کی وجہ پوچھی گئی تو انہوں نے بتایا کہ ’میلکم نے کبھی شادی کے حوالے کوئی بات نہیں کی اور میں نے بھی اس بارے میں کوئی سوال نہیں پوچھا‘۔

مقامی خبر رساں ادارے کے مطابق عمر رسیدہ جوڑا آئندہ کی 16 تاریخ کو قریبی ہوٹل میں شادی کے بندھن میں بندھ جائے گا۔

غیر ملکی میڈیا کا کہنا تھا کہ 100 سالہ دلہن کی اس سے قبل دو مرتبہ شادی ہوچکی ہے اور ان کی ایک بیٹی بھی ہے، لیکن ان کے دونوں سابقہ شوہروں کی موت ہوگئی تھی اور 74 سالہ دولہا میلکم بھی طلاق یافتہ ہیں۔

نورا وٹکس نے بتایا کہ ’وٹکس سے ان کی ملاقات سنہ 1980 میں ہوئی تھی، جس کے بعد ہم دونوں ایک ساتھ زندگی گزار رہے ہیں۔

مقامی خبر رساں اداروں کا کہنا ہے کہ یٹس میلکم ماضی میں ایک بس ڈرائیور تھے، جنہوں نے چند ہفتوں قبل ہی مستقبل میں شریک حیات بننے والی بزرگ خاتون کو شادی کی پیش کش کی تھی۔

وٹکس میلکم کا کہنا تھا کہ ’ہم کئی برسوں سے ایک ساتھ رہ رہے تھے اور لوگ ہم سے سوال پوچھتے تھے کہ کیا ہماری شادی ہوئی ہے؟ اس لیے ہم نے شادی کا فیصلہ کیا۔

میلکم نے بتایا کہ عروسی کی تقریب قریبی ہوٹل میں 16 اکتوبر کو منعقد ہوگی،جس میں ہمارے اہل خانہ اور قریبی دوست سمیت کل 30 افراد شرکت کریں گے۔

Comments

comments

یہ بھی پڑھیں