The news is by your side.

Advertisement

مسلمان سابق اداکارہ بھی نسلی تعصب کی شکار

بھارت کی سابق اداکارہ عائشہ ٹاکیہ بھی نسلی تعصب کا شکار ہوگئیں۔

میڈیا رپورٹ کے مطابق عائشہ ٹاکیہ کو ’گووا‘ ایئرپورٹ پر افسران کی جانب سے نسلی تعصب کا نشانہ بنایا گیا اور ہراساں کرنے کی بھی کوشش کی گئی۔

سابق اداکارہ سے بدتمیزی پر ان کے شوہر فرحان اعظمی نے سماجی رابطے کی سائٹ ٹوئٹر پر واقعے کے خلاف آواز بلند کی، ساتھ انہوں نے دو افسران کی تصاویر بھی شیئر کیں۔

فرحان اعظمی نے ٹوئٹ میں لکھا کہ میں بیوی اور اپنے بیٹے کے ساتھ گووا سے ممبئی آرہا تھا، گوا ایئرپورٹ پر افسران نے میری بیوی کو چھونے کی کوشش کی اور مغلظات بھی بکیں۔

انہوں نے بتایا کہ ان افسران نے بدتمیزی کرتے ہوئے مجھے اپنی فیملی سے الگ کرکے دوسری لائن میں کھڑا کردیا تھا۔

سابق اداکارہ کے شوہر نے افسران کے خلاف حکام کو شکایت درج کرا دی ہے۔

واقعہ سوشل میڈیا پر وائرل ہوا تو گوا ایئرپورٹ انتظامیہ نے فرحان اعظمی کے ٹوئٹ پر کمنٹ کیا اور کہا کہ سفر کے دوران آپ کو اور آپ کی فیملی کو جو بھی تکلیف اٹھانی پڑی، اس کے لیے ہم معافی مانگتے ہیں، معاملے کی مکمل جانچ پڑتال کی جائے گی۔

واضح رہے کہ بھارت میں ہندو توا نظریئے کے تحت مسلمانوں پر ظلم کے پہاڑ توڑے جارہے ہیں اور آئے روز مسلم نوجوانوں کو بہیمانہ تشدد کا نشانہ بنایا جاتا ہے جس کے باعث متعدد نوجوان موت کے وادی میں جاچکے ہیں۔

Comments

یہ بھی پڑھیں